سفارش پر ترقیاں لینے والے ڈاکٹروں کیخلاف کریک ڈاﺅن کا ّآغاز

سفارش پر ترقیاں لینے والے ڈاکٹروں کیخلاف کریک ڈاﺅن کا ّآغاز

                                    لاہور(جاوید اقبال)محکمہ صحت نے کرنٹ چارج بنیادوں پر اعلی سفارش پر عارضی بنیادوں پر ترقیاں لے کر بڑے اور پرکشش عہدوںکے مزے لینے والے ڈاکٹروں کے خلاف کریک ڈاﺅن کا آغاز کردیا ہے جس کے تحت جنرل منیجر آپریشنز پاکستان ریلوے کی اہلیہ اور لاہورجنرل ہسپتال کے شعبہ پتھالوجی کی کرنٹ چار ج ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر مسز جاوید انور بوبک کا کرنٹ چارج منسوخ کردیا ہے اور ان سے ایسوسی ایٹ پروفیسر کا عہدہ واپس لے کر انہیں سینئر رجسٹرار کم اسٹنٹ پروفیسر بنادیا ہے جبکہ ایف آئی اے لاہور کے ڈائریکٹر ڈاکٹر عثمان انور کی ہمشیرہ اور پی جی ایم آئی کی ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر خدیجہ سے بھی کرنٹ چارج بنیادوں پر لی گئی ترقی واپس لے لی ہے اور انہیں ایسوسی ایٹ پروفیسر سے اسسٹنٹ پروفیسر بنادیا ہے اس طرح سیکرٹری صحت نے بڑی سفارشوں پر عارضی بنیادوں پر جونیئر سے سینئر بننے والے میڈیکل آفیسرز سے رجسٹرار عہدے کے 17وہ ڈاکٹرز جنہوں نے ایسوسی ایٹ اور پروفیسر کے عہدے سنبھال رکھے تھے ان سے عہدے و اپس لیتے ہوئے ان کے کرنٹ چارج منسوخ کردیئے ہیں۔ جبکہ آئندہ کے لئے کرنٹ چارج کے ساتھ عارضی بنیادوں پر ترقیاں لینے والوں کے لئے فارمولا طے کرکے جاری کردیا ہے جس کے تحت ڈاکٹروں کی ترقی دینے کے لئے دو قانون رائج کردیئے ہیں کہ شہر لاہور کے ہسپتالوں میں فرائض سرانجا م دینے والے ڈاکٹروں کو خالی عہدوں پر کرنٹ چارج بنیادپر ترقی پابندی ہوگی۔جبکہ لاہور سے باہر صوبہ کے دیگر ہسپتالوں میں جانے والے ڈاکٹروں کو اگلے گریڈ میں ریگولر پرموشن کے بغیر کرنٹ چارج پر ترقی دی جائے گی ۔جس کے تحت سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک نے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کرنٹ چارج یا عارضی بنیادوں پر جونیئر ڈاکٹروں نے بڑے عہدوں پر ترقیاں دے رکھی ہیں ان کے کرنٹ چارج میں توسیع نہ کی جائے اور جس کی مدت کرنٹ چارج پوری ہوگئی ہے ان کو ان کے اصل گریڈ اور عہدے پر لگایا جائے جس کا شکار آغاز میں لاہور جنرل ہسپتال میں تعینات جنرل منیجر آپریشنز پاکستان ریلوے کی اہلیہ مسز جاوید انور بوبک اور ایف آئی اے لاہور کے ڈائریکٹر ڈاکٹر عثمان انور کی ہمشیرہ اور پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیا لوجی کے شعبہ بے ہوشی کے اسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر سردار سمیت 17ڈاکٹر آتے ہیں جن کی عارضی ترقیاں واپس لے کر ان کو پچھلے عہدوں پر تعینات کردیا گیا ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ جنرل منیجر آپریشنز ریلوے پاکستان نے اپنی اہلیہ کا کرنٹ چارج پر دیا گیا ایسوسی ایٹ پروفیسر کا عہدہ بچانے کے لئے وفاقی وزیر ریلوے سمیت کئی بڑی سفارش کرائیں مگر سیکرٹری صحت نے قانون سب کے لئے برابر کہہ کر انہیں عارضی بنیادوں پر ترقی دینے سے معذرت کرلی۔جس سے جنرل منیجر آپریشنز ریلوے سیکرٹری صحت سے ناراض ہوگئے ۔ ان دو خواتین کو دیئے گئے کرنٹ چارج بنیادوں پر عہدے واپس دلانے کے لئے مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق کی کوششیں بھی ناکام ثابت ہوئیں جس کے بعد سیکرٹری صحت نے کرنٹ چارج بنیاد پر ترقی لینے والے ڈاکٹرں کے لئے تیار فارمولا جاری کردیا ہے ۔آئندہ سے لاہور کے ہسپتالوں میں فرائض سرانجام دینے والے ڈاکٹروں کو کرنٹ چارج پر ترقی نہیں ملے گی اگر وہ اس بنیاد پر ترقی لینے کا خواہش مند ہوا تو انہیں لاہور کے باہرہسپتالوں میں جانا ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1