موت کے بعدایپل کے بانی کو مقدمے کا سامنا

موت کے بعدایپل کے بانی کو مقدمے کا سامنا
موت کے بعدایپل کے بانی کو مقدمے کا سامنا

  

آک لینڈ(نیوزڈیسک)ایپل کے بانی سٹیو جابز کو اس دنیا سے رخصت ہوئے تین سال ہوچکے ہیں لیکن اب اسے اور اس کی کمپنی ایپل کو مقدمے کا سامنا ہے۔ یہ مقدمہ ان چند خریداروں کی جانب سے کیا گیا ہے جو 2006ءسے 2009ءتک ایپل آئی پوڈ خرید چکے ہیں۔مدعیوں نے یہ موقف اپنایا ہے کہ ایپل کے بانی نے antitrustقوانین کو توڑتے ہوئے آئی پوڈ صارفین کو مجبور کیا کہ وہ صرف ایپل آئی ٹیون سٹور سے ہی خریداری کریں۔

ایپل آئی واچ کے بارے میں وہ باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں ,جاننے کے لئے کلک کریں

یہ مقدمہ ریاست کیلی فورنیا کے شہر آک لینڈ کی عدالت میں کیا گیا ہے اور ایپل سے 350ملین ڈالرز(35ارب ڈالر)تاوان کا مطالبہ کیا گیا ہے۔صارفین کے وکیل نے ایپل کے خلاف ثبوت پیش کئے جس میں ایپل کے بڑے ایگزیکٹوز اور سٹیو جابز کی ای میل کا ریکارڈ دکھایا گیا جس میں انہوں نے رئیل نیٹ ورک کی جانب سے خطرات کا ذکر کیا ہوا تھا۔وکیل نے بتایا کہ ایپل کا خیال تھا کہ اس طرح انہیں نقصان ہو رہا ہے لہذا انہوں نے ایسا سافٹ وئیر تیار کیا جس سے صارفین کو آئی پوڈ استعمال کرنے میں مشکلات پیش آئیں۔ایپل کے وکیل نے دفاع کرتے ہوئے کہا کہ ایپل کے پاس یہ حق حاصل تھاکہ وہ آئی پوڈکی سیکیورٹی بہتر بناتے ہوئے اسے رئیل نیٹ ورک کے نقصانات سے بچانا تھاجبکہ ای میلز کا تبادلہ بھی ان نقصانات سے بچنے کے لئے کیا گیا تھا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی