فرانس میں فاضل مواد سے بائیو گیس اور کھاد تیار کی جانے لگی

فرانس میں فاضل مواد سے بائیو گیس اور کھاد تیار کی جانے لگی

پیرس (اے پی پی) فرانس میں فاضل مواد سے بائیو گیس اور کھاد تیار کی جا رہی ہے۔ اقوام متحدہ کے زیر اہتمام پیرس میں جاری کانفرنس میں دنیا بھر سے آئے مندوبین اور ماہرین کو جو کھانا اور خوراک فراہم کیا جا رہا ہے ایک اندازے کے مطابق اس سے تقریباً ایک ٹن بچ جانے والی خوراک، پھلوں اور سبزیوں کے چھلکوں کو بھی کارآمد انداز میں استعمال میں لایا جا رہا ہے۔

دارالحکومت پیرس سے تیس کلومیٹر دور ایک پلانٹ میں اس فاضل مواد سے بائیو گیس اور کھاد تیار کی جا رہی ہے۔ موئلینو کومپوس اینڈ بائیوگیس نامی کمپنی کے سربراہ اسٹیفاں مارینز کہتے ہیں کہ فرانسیسی میں ہم کہتے ہیں کہ جو زمین سے آتا ہے وہ زمین میں ہی جاتا ہے اور بچ جانے والی خوراک سے یہ ممکن ہے۔ان کی کمپنی ریستورانوں اور دیگر اداروں کو بچ جانے والی فالتو خوراک کے صحیح استعمال سے متعلق معاونت فراہم کرتی ہے۔فرانس کی حکومت بھی مختلف شعبوں پر یہ زور دیتی آ رہی ہے کہ وہ اپنے ہاں بچی ہوئی فالتو خوراک کو دیگر کوڑے کرکٹ سے علیحدہ کریں تاکہ اس سے توانائی کے پیداوار میں مدد لی جائے۔

مزید : کامرس