کورین سفیرسو ڈانگ گو کا راولپنڈی چیمبر آ ف کامرس اینڈ انڈسٹری کادورہ

کورین سفیرسو ڈانگ گو کا راولپنڈی چیمبر آ ف کامرس اینڈ انڈسٹری کادورہ

  

راولپنڈی (کامرس ڈیسک) کوریا پاکستان کے ساتھ تجارتی تعاون کو فروغ دے گا اور پاکستانی بزنس کمیونٹی کو کوریا میں کاروبار کرنے کے لیے ہر سہولت فراہم کی جائے گی پاکستان میں سرمایاکاری کے وسیع مواقع موجود ہیں کوریا کی کئی کمپنیاں پہلے سے ہی پاکستان میں کام کر رہی ہیں جو توانائی، بنیادی ڈھانچے کی بہتری، زراعت، ہائیڈل اور آٹو پارٹس جیسے شعبوں میں سرمایا کاری اور معاونت فراہم کررہی ہیں ان خیالات کا اظہار پاکستان میں کوریا کے سفیرسوڈانگ گو (Suh Dong-gu)نے راولپنڈی چیمبر آ ف کامرس اینڈ انڈسٹری میں صدر چیمبر راجہ عامر اقبال سے ملاقات میں کیا ان کے ہمراہ اکنامک قونصلرپارک بونگسو اورپارک سیکووبھی تھے صدر چیمبر سے گفتگو کرتے ہوئے کوریا کے سفیر نے کہا کہ پاکستان اور کوریا کے درمیان دو طرفہ تجارتی حجم 2012 میں 1.6ارب ڈالر کے قریب تھا جو کم ہو کر 1.2ارب ڈالر رہ گیا ہے

جو دونوں ملکوں کے لیے تشویش ناک ہے اس کمی کی وجوہات کئی ہیں جن میں توانائی کا بحران، سکیورٹی کی صورتحال ،تجارت اور تعاون کے متعلقہ شعبوں کے بارے میں معلومات کا کم ہونا ہے تاہم انہوں نے کہا کہ اب پاکستان میں سلامتی کی صورتحال پہلے سے کافی بہتر ہے اور بجلی کی کمی بھی دور ہو رہی ہے اس کے ساتھ ساتھ اقتصادی اشاریے کافی مثبت ہیں انہوں نے تجارتی وفود کے تبادلوں پر زور دیا تاکہ تجارتی سرگرمیاں فروغ پا سکیں اس موقع پر راولپنڈی چیمبر کے صدرراجہ عامر اقبال نے کہاکہ کوریا پاکستان کا گہرا دوست ملک ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تجارت کا فروغ وقت کی اہم ضرورت ہے۔انہوں نے زور دیتے ہوئے کہاکہ دو طرفہ تجارت کا حجم بڑھانے اور تجارتی تعلقات مضبوط بنانے کے لیے ضروری ہے کہ کوریا کی کمپنیاں پاکستان میں جوئنٹ وینچر کریں ٹیکنالوجی کی منتقلی کی جائے اور غیر روایتی تجارتی اشیاء کوفروغ دیا جائے تاکہ برآمدات کے حجم کو بڑھایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اعدادو شمار کے مطابق دونوں ممالک کے درمیان تجارت کا حجم 1.2بلین ڈالر ہے انہوں نے کہا کہ راولپنڈی ریجن میں تجارتی سرگرمیوں کے مواقع موجود ہیں اور ہمارے تاجر چمڑے، آٹو پارٹس، فوڈ، ادویات، پولٹری، زیورات اور قیمتی پتھر کے شعبے میں کوریا کے تجربات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ کوریا اس سلسلے میں ہمیں ضروری تربیت اور راہنمائی فراہم کرے گا۔صدر آر سی سی آئی نے کہاکہ کوریا ایک تیزی سے ترقی کرتا ہوا صنعتی ملک ہے چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت صنعتی زونز میں کوریا کی کمپنیاں پاکستانی کمپنیوں کے ساتھ مل کر مشترکہ منصوبے لگا سکتی ہیں اس سلسلے میں ایس ایم ای سیکٹر ایک بہترین بنیاد بن سکتا ہے

راجہ عامر اقبال نے کہا چیمبر کی سطح پر وفود کے تبادلے ہونا چائیں تاکہ دونوں ملکوں کی کاروباری برادری ایک دوسرے کے قریب آسکے کوریا پاکستان کے زرعی شعبے، انفراسٹرکچر، اور ٹیکسٹائل کی ترقی کے لئے جدید صنعتی و زرعی آلات ومشینری فراہم کرے تاکہ پاکستان کم وقت میں زیادہ سے زیادہ پیداوار کرکے ملک کے لیے زرمبادلہ کما سکے آخر میں سینئر نائب صدر چیمبرراشد وائیں نے کوریا کے سفیر کا شکریہ ادا کیا اس موقع پر سفیر کو چیمبر آنے پر ایک یادگاری شیلڈبھی دی گئی اس موقع سینئر نائب صدر راشد وائیں ، نائب صدر عاصم ملک اور سیکرٹری جنرل عرفان منان بھی موجود تھے

مزید :

کامرس -