نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کیلئے دائردرخواست پر وفاقی حکومت کودوبارہ نوٹس

نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کیلئے دائردرخواست پر وفاقی حکومت کودوبارہ نوٹس

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لئے دائردرخواست پر وفاقی حکومت کودوبارہ نوٹس جاری کردیئے ہیں جبکہ پنجاب حکومت نے جواب داخل کیا ہے کہ ضرورت پڑی تو نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لئے رینجرز طلب کی جائے گی۔درخواست گزاروکیل اظہرصدیق نے موقف اختیارکیاکہ پنجاب حکومت نیشنل ایکشن پلان پر اس کی روح کے مطابق عمل نہیں کررہی جس سے صوبے میں امن وامان کے مسائل میں کمی نہیں ہورہی،پنجاب حکومت نیشنل ایکشن پلان کے 20میں سے صرف 8نکات پر عمل درآمد کیا،جو حکومتی نااہلی کو ظاہر کرتا ہے،درخواست گزار کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ پنجاب میں امن و امان کی بہتری اور دہشت گردی کے مکمل خاتمہ یقینی بنانے کاحکم دیا جائے جبکہ صوبے میں رینجرز کی تعیناتی کے احکامات صادر کئے جائیں،سرکاری وکیل نے پنجاب حکومت کی جانب سے جواب داخل کراتے ہوئے موقف اختیارکیاکہ ضرورت پڑنے پر رینجرز طلب کی جائے گی،وفاقی حکومت کی جانب سے وکیل نے جواب داخل کرنے کے لئے مزید مہلت کی استدعا کی جس پر عدالت نے وفاقی حکومت کو 16جنوری کے لئے دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -