رواں ماہ کے دوران 15سے زائد افراد جو پولیس مقابلوں میں ’’پار‘‘ کر دیا گیا

رواں ماہ کے دوران 15سے زائد افراد جو پولیس مقابلوں میں ’’پار‘‘ کر دیا گیا

  

لاہور(کرائم رپورٹر)رواں ماہ پنجاب بھر میں پولیس مقابلوں کی بڑھتی ہوئی شرح نے سی آئی اے اور انوسٹی گیشن پولیس کی کارکردگی کا پول کھول دیا ہے۔رواں ماہ کے دوران15 سے زائد افراد کو قانون کے رکھوا لوں نے مبینہ طورپر موت کے گھاٹ اتار دیا ہے۔ ملزمان کیخلاف ثبوت حاصل کر کے انہیں عدالت کے ذریعے سزا دلوانے کی بجائے انہیں پولیس مقابلوں میں ’’پار‘‘کر دینا نہ صرف ملک کے عدالتی نظام کو کھلاچیلنج کرنے کے مترادف ہے بلکہ یہ بھی ظاہر کرتا ہے کہ پولیس میں کتنی پیشہ ورانہ صلاحیت موجود ہے۔تفصیلات کے مطابق پنجاب میں پولیس مقابلوں کی تاریخ قیام پاکستان سے چلی آ رہی ہے،ابتداء میں پولیس کی جانب سے نہایت خطرناک ملزموں کو عدم ثبوت کی وجہ سے ماروائے عدالت پولیس مقابلوں میں مبینہ طور پر مار دیا جاتا ہے لیکن گزشتہ چند سالوں میں مبینہ پولیس مقابلوں میں خطرناک حد تک اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ذرائع کے مطابق جب بھی سٹریٹ کرائم میں اضافہ ہوتا ہے تو ملزمان کے دل میں خوف پیدا کرنے کے لئے پولیس مقابلوں کا سلسلہ شروع کر دیا جاتا ہے ۔اب ملزمان چاہے وہ خطرناک اشتہاری ہوں یامعمولی جرائم پیشہ افراد کو پولیس مقابلوں میں ثبوتوں کی کمی کے ساتھ ساتھ پولیس حکام کی ذاتی رنجشوں،بااثر افراد کے دباؤ ،عوام الناس اور جرائم پیشہ افراد میں پولیس کی دھاک بٹھانے کے لیے مارا جا رہا ہے اس کیساتھ ساتھ پولیس کی جانب سے چند گھسی پٹی کہانیاں ہی پولیس مقابلوں کے حوالے سے بتائی جاتی ہیں جن میں ملزم کو عدالت لیکرجایا جا رہا تھا کہ اس کے ساتھیوں نے حملہ کر دیا اور ملزم جاں بحق ہو گیا اور نہ کوئی ساتھی زخمی ہوا نہ کوئی پولیس اہلکار یا ملزم نے پولیس اہلکار سے پستول چھیننے کی کوشش کی اور مارا گیاوغیرہ۔ذرائع کے مطابق پولیس مقابلوں میں معمولی جرائم پیشہ افراد کا مارے جانا انویسٹی گیشن پولیس کی نااہلی اور ان میں پیشہ ورانہ صلاحیتوں کی کمی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔پولیس اہلکاروں کو ملزم کے جرائم کا پتہ ہوتا ہے لیکن ثبوت نہ حاصل کر سکنے یا سستی کی وجہ سے اس کی زندگی کو ماروائے عدالت ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا جاتا ہے۔اس حوالے سے پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پولیس مقابلوں کے جعلی ہونے یا کسی رنجش کی بناء پر ہونے والی بات میں کوئی سچائی نہیں ہے ۔پولیس مقابلے پولیس کے پٹرولنگ کے نظام کی کارکردگی کو ظاہر کرتے ہیں اور پولیس اہلکار جان پر کھیل کر عوام الناس کی حفاظت کے لئے پولیس مقابلہ کرتے ہیں تاکہ جرائم پیشہ افراد کا قلع قمع کیا جا سکے۔

مزید :

صفحہ آخر -