کربلا سے واپسی ، ہزاروں زائرین تفتان میں پھنس گئے ، شدید مشکلات کا سامنا

کربلا سے واپسی ، ہزاروں زائرین تفتان میں پھنس گئے ، شدید مشکلات کا سامنا

  

ملتان (سٹی رپورٹر)کربلاء سے واپسی، پاکستان کے سرحدی شہر تفتان میں زائرین نے ہزاروں کے اجتماع کی شکل اختیار کر لی۔ کئی کئی روز سے قافلہ کوئٹہ روانہ نہ ہونے کی وجہ سے ملک بھر کے زائرین ایک بار پھر تفتان میں پھنس گئے۔ ہزاروں زائرین سکیورٹی کلیئرنس نہ ملنے کی وجہ (بقیہ نمبر28صفحہ12پر )

سے دن رات کھلے آسمان تلے شدید سردی میں رہنے پر مجبور ہیں۔ اس حوالہ سے معلوم ہوا ہے کہ کربلاء سے چہلم حضرت امام حسین منانے کے بعد واپس آنے والے زائرین پاک ایران بارڈر پر گزشتہ کئی روز سے پھنسے ہوئے ہیں۔ زائرین میں ملتان سے تعلق رکھنے والے مرد و خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شامل ہے۔ زائرین کے مطابق حکومت کی جانب سے پندرہ روز میں صرف دو قافلے کوئٹہ کے لئے روانہ کئے جا رہے ہیں جس کی وجہ سے تفتان میں زائرین کے رش میں بے تحاشا اضافہ ہو چکا ہے۔ ملتان سے تعلق رکھنے والے تفتان بارڈر پر پھنسے ہوئے زائرین کے مطابق وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ زائرین کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، بنجر و بیابان علاقہ ہونے کی وجہ سے کھانے پینے کی اشیاء تک دستیاب نہیں ہیں جس کی وجہ سے بچوں کو شدید قسم کی مشکلات درپیش ہیں۔انہوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ حکمران پاکستانی زائرین کی واپسی کے لئے فوری طور پراقدامات کریں۔ علاوہ ازیں تفتان بارڈر پر پھنسنے والے پاکستانی زائرین کے لواحقین انتہائی پریشانی کا شکار ہیں اور مسلسل رابطوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -