ریاست اپنی ذمہ داری سے غافل ، عوام احتجاج پر مجبورہیں ، عنایت اللہ

ریاست اپنی ذمہ داری سے غافل ، عوام احتجاج پر مجبورہیں ، عنایت اللہ

  

چارسدہ (بیورورپورٹ)صوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ خان نے کہا ہے کہ ریاست اپنی ذمہ داری پوری نہیں کر رہی اسلئے عوام سڑکوں پر احتجاج پر مجبور ہے ۔وطن عزیز میں کمزور سسٹم کی وجہ سے منتخب ارکان پارلیمنٹ قانون سازی کی بجائے عوام کے روز مرہ دفتری مسائل حل کر نے میں لگے ہوئے ہیں ۔ نادرا دو مہینے کے اندر اندر بلاک شناختی کارڈ ز ریلیز کریں بصورت دیگر ہزاروں افراد کو لے کر وزارت داخلہ کے سامنے احتجاج کرینگے ۔ وہ مرکز اسلامی چارسدہ میں پبلک سیکرٹریٹ کے افتتاح کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کر رہے تھے اس موقع پرجماعت اسلامی کے ضلعی امیر محمد ریاض خان ، ضلعی نائب ناظم اعلی مصور شاہ ، تحصیل ناظم خلیل بشیر خان عمرزئی ، نائب ناظم ڈاکٹر الطاف ، ضلعی محکموں کے افسران اور جماعت اسلامی کے دیگر ذمہ داران بھی موجود تھے ۔ تقریب سے ضلعی امیر محمد ریاض خان نے بھی خطاب کیا۔ صوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ خان نے کہا کہ موجودہ سسٹم عوام کا استحصال کر رہی ہے جس کی وجہ سے عوام سڑکوں پر سراپا احتجاج ہے ۔ ریاست جب اپنی ذمہ داریاں بطریقہ احسن نبھانے میں ناکام ہو تی ہے تو عوام بغاوت پر اتر آتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی وطن عزیز میں ایک ایسے خود کار نظام کیلئے جدوجہد کر رہی ہے جس میں ریاستی ادارے از خود عوام کے مسائل اور مشکلات حل کر سکے ۔ سسٹم کی خرابی کی وجہ سے ارکان پارلیمنٹ قانون سازی کی بجائے عوام کے روز مرہ مسائل اور دفاتر کے کاموں میں لگے ہوئے ہیں ۔ آج لاکھوں لوگوں کے شناختی کارڈ بلاک ہیں اورمتاثرہ لوگ تین سال سے شناختی کارڈ کے ریلیز کیلئے در بدر کی ٹھوکری کھا رہے ہیں ۔ شناختی کارڈ بلاک ہونے کی وجہ سے متاثرہ لوگوں کی روز مرہ امور ٹھپ ہو چکے ہیں ۔ انہوں نے دھمکی دی کہ دو مہینے کے اندر اندر نادرا بند شناختی کارڈ کے حوالے سے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کریں بصورت دیگروہ لاکھوں افراد کے ہمراہ وزارت داخلہ کے سامنے سراپا احتجاج ہونگے ۔انہوں نے کہا کہ واپڈا خیبر پختونخوا کو بجلی کے ترسیل میں اپنا حق نہیں دے رہی ہے جس کی وجہ سے عوام لوڈ شیڈنگ کے خلاف سراپا احتجاج ہے ۔ وفاقی حکومت خیبر پختونخواکو آئینی حق سے محروم کر رہی ہے جس کی وجہ سے خیبر پختونخوا کے عوام گوں نا گوں مسائل اور مشکلات سے دو چار ہے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -