عالمی ادارہ صحت کا پاکستان میں ٹی بی کے خاتمے کیلئے بھرپور تعاون کا اعلان

عالمی ادارہ صحت کا پاکستان میں ٹی بی کے خاتمے کیلئے بھرپور تعاون کا اعلان

لاہور(جنرل رپورٹر ) پاکستان سے 2030 تک ٹی بی کے مرض کے خاتمہ کا ہدف حاصل کرنے کے لئے عالمی ادارہ صحت (WHO) وفاقی حکومت اور پنجاب ٹی بی کنٹرول پروگرام کو ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کے لئے تیار ہے۔اس مقصد کے لئے تمام متعلقہ سرکاری محکموں، سوشل اور کارپوریٹ سیکٹر کو ملکر ملٹی سیکٹرل اپروچ کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہے۔ان خیالات کا اظہار جینیوا سوئٹزر لینڈ اور قاہرہ مصر سے پاکستان کے دورہ پر آئے ہوئے عالمی ادارہ صحت کے ہائی لیول ٹی بی مشن کے وفد نے پنجاب ٹی بی کنٹرول پروگرام (PTP) کے لاہور میں واقع آفس کے دورہ کے موقع پر تپ دق کی روک تھام اور مریضوں کو دی جانے والی سہولیات بارے پراونشل ڈائریکٹر PTP ڈاکٹر زرفشاں کی جانب سے ایک بریفنگ کے دوران کیا۔ وفد میں ڈاکٹر تیریزہ کساوا،ڈاکٹر کرسٹین ،ڈاکٹر رانا حاجی،ڈاکٹر محمد اختر و دیگر شامل تھے ،لاہور میں WHO کے نمائندے ڈاکٹر عرفان بھی موجود تھے۔ ایڈیشنل ڈائریکٹر PTP ڈاکٹر آصف، ڈاکٹر عثمان اور ڈویلپمنٹ آپریشن مینیجر زبیر احمد شاد نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ ڈاکٹر زرفشاں طاہر نے بتایا کہ اس وقت سرکاری ہسپتالوں میں ٹی بی کے مرض کی تشخیص کے لئے 108جدید جین ایکسپرٹ مشینیں نصب کی گئی ہیں جبکہ مزید 45 مشینیں جلد سسٹم میں شامل کردی جائینگی۔ ڈاکٹر زرفشاں کا کہنا تھا کہ کل 170 جین ایکسپرٹ مشین نصب کرنے کا ٹارگٹ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ صوبے کے 126 ہسپتالوں میں ون ونڈو ٹی بی روم قائم کئے گئے ہیں تاکہ ٹی بی کے مریضوں کو ایک ہی جگہ تشخیص اور اعلاج کی سہولت دستیاب ہو سکے۔

عالمی ادارہ صحت

مزید : میٹروپولیٹن 1