حکومت جنوبی پنجاب صوبہ بنانے میں سنجیدہ نہیں،علی حیدر گیلانی

حکومت جنوبی پنجاب صوبہ بنانے میں سنجیدہ نہیں،علی حیدر گیلانی

لاہور(نمائندہ خصوصی )پیپلزپارٹی کے رکن پنجاب اسمبلی علی حیدرگیلانی نے کہا ہے کہ حکومت جنوبی پنجاب صوبہ بنانے میں سنجیدہ نہیں ہے۔جنوبی پنجاب محاذ والے وزراتیں لے کر خاموش ہو گے ہیں ۔18ویں آئینی ترمیم میں تبدیلی کیلئے حکومت کو دو تہائی اکثریت چاہیے۔عمران خان نے اسمبلیوں کے اندر اور باہر اپوزیشن کیخلاف محاذ کھول رکھے ہیں۔

کسان دو دن سے دھرنہ دیے بیٹھے ہیں لیکن حکومت کسانوں کے مسائل کو سنجیدیگی سے نہیں لے رہی۔پنجاب اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے علی رضا گیلانی نے مزید کہا جنوبی پنجاب صوبہ بھی بنانے کیلئے حکومت کو آئینی ترمیم کی ضرورت ہو گی ۔ایڈمنسٹریٹرصوبے کا متبادل نہیں ہو سکتا۔پیپلزپارٹی نے سب سے پہلے پنجاب اسمبلی سے جنوبی پنجاب صوبے کی قرارداد منظور کرائی ۔جب پیپلزپارٹی کی وفاق میں حکومت تھی تو ہم جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنانے کیلئے تیار تھے لیکن کچھ رکاوٹیں کھڑی کر دی گئیں جس کی وجہ سے اس وقت صوبہ نہ بن سکااگر موجودہ حکومت جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنانا چاہتی ہے تو اپوزیشن کے ساتھ اچھا اور جمہوری رویہ اختیار کرنا ہو گا ۔

گیلانی

مزید : میٹروپولیٹن 4