مدارس کو درپیش مسائل کے حل کے لئے علماء کنونشنز کرنے کا فیصلہ

مدارس کو درپیش مسائل کے حل کے لئے علماء کنونشنز کرنے کا فیصلہ

کراچی(اسٹاف رپورٹر )جامعہ علوم اسلامیہ بنوری ٹاؤن میں وفاق المدارس العربیہ کا اہم اجلاس مولانا ڈاکٹر عادل خان کی صدارت میں منعقد ہوا،جس میں مولانا امداداللہ یوسف زئی، مفتی محمد نعیم،مولانا قاری عبدالرشید،مفتی محمدخالد،مولانا ڈاکٹر سعید اسکندر،مولانا راحت علی ہاشمی اور مولانا طلحہ رحمانی نے شرکت کی،وفاق المدارس کے میڈیا کوآرڈینیٹر مولانا طلحہ رحمانی نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ وفاق المدارس نے ملک بھر میں پیغام مدارس کے عنوان سے عوامی رابطہ مہم شروع کی ہے،صوبہ سندھ اسی سلسلہ کے پہلے مرحلہ میں کراچی،حیدرآباد،لاڑکانہ اور سکھر میں چھ اجتماعات منعقد کیے جائیں گے،جو 20دسمبر سے شروع ہوکر 20 جنوری تک کیے جائیں گے،جامعہ فاروقیہ حب ریوڑ روڈ میں 20دسمبر کو پہلا پروگرام ہوگا۔تمام پروگراموں میں مدارس کے مہتممین، آئمہ مساجد اور معروف علمی شخصیات شرکت کریں گی۔مولانا طلحہ رحمانی کے مطابق پاکستان کے ہزاروں مدارس دین اسلام کی خدمت میں مصروف عمل ہیں،وفاق المدارس کے تحت بیس ہزار سے ملحق مدارس میں پچیس لاکھ طلبہ و طالبات زیر تعلیم ہے،اسلامی دنیا کے کئی ممالک میں وفاق المدارس کی خدمات کو تسلیم کیا جاتا رہا ہے،مدارس کا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں صرف جہالت کے خاتمہ میں اپنا کردار ادا کررہا ہے،اسلام کے نام پہ وجود میں آنے والے ملک میں اسلامی تشخص کو معاشرہ میں فروغ دینے کا بنیادی نظریات کردار بھی ادا کررہاہے،مولانا طلحہ رحمانی کے مطابق افسوسناک امر ہے کہ آج تک مدارس کی خدمات کا اعتراف کے برخلاف آئے روز منفی رویہ اپنانا حکومتوں کا وطیرہ رہا ہے،اس اہم اجلاس میں مدارس کو درپیش مسائل کاجائزہ لیا گیا جس میں رجسٹریشن،کوائف نامہ کے نام پہ ہراساں کرنا شامل ھے،ان مسائل کو حل کرنے کے لیے پہلے مرحلہ پہ مدارس کے ذمہ داران وعلماء کے کنونشن اور دوسرے مرحلہ میں عوامی سطح کے اجتماعات منعقد ہونگے جس میں مدارس کی روشن تعلیمی خدمات و مقاصد کو اجاگر کیا جائے گا،اجلاس میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن میں مساجد و مدارس کو نقصان پہنچانے پہ تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وفاق المدارس کے اعلی سطحی وفد کی وزیر اعلی و گورنر سمیت دیگر اداروں کے سربراھاں سے فوری ملاقات کرنیکا فیصلہ بھی ہوا

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر