’گناہ‘ ٹیکس کے خلاف کاشتکاروں کا احتجاج

’گناہ‘ ٹیکس کے خلاف کاشتکاروں کا احتجاج

کراچی(پ ر) خیبر پختونخوا میں سرحد چیمبر آف ایگریکلچر کے سینئر وائس پریزیڈنٹ فضل الہٰی خان نے ایک بیان میں تمباکو پر’ گناہ‘ ٹیکس ('Sin' Tax ) لگانے کے بارے میں وزارت صحت کے اعلان کی سخت مذمت کی ہے۔ وہ صحت کے وفاقی وزیر کے اس اعلان کے حوالے سے بات کر رہے تھے جس میں انہوں نے کہا تھاکہ وہ جلد ہی پارلیمنٹ میں ایک بل پیش کریں گے جس میں سگریٹ اور تمباکو پر ’گناہ‘ ٹیکس لگانے کی سفارش کی جائے گی اور یہ ٹیکس صحت سے تعلق رکھنے والے شعبوں پر خرچ کیا جائے گا۔فضل الہٰی نے کہا ،’’ ٹیکس میں گناہ کے لفظ کا استعمال صوبہ خیبر پختونخوا کے باعزت کاشتکاروں کی توہین ہیں جودہائیوں سے تمباکو کاشت کر رہے ہیں اور یہ ان کا اصل روزگار ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر لوگ فلپائن کی بات کر رہے ہیں جہاں شراب اور تمباکو پر گناہ ٹیکس (Sin Tax )نافذ ہے ۔ ’’کیا وزیر صاحب خیبر پختونخوا کے باعزت کاشتکاروں کو شراب کا کاروبار کرنے والا سمجھتے ہیں؟وہی کاشتکار جنہوں نے کئی برس تک عمران خان اور پی ٹی آئی کی حمایت کی ہے، ان کی اب اس طرح توہین کی جائے گی؟ ‘‘انہوں نے سوال کیا، ’’کیا یہی نیا پاکستان ہے جس کے لیے ہم نے ووٹ دئیے تھے 150 جہاں دیانتدار کاشتکاروں کو گناہ اور شراب فروشوں کے برابر سمجھا جائے گا؟‘‘

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر