پولیس افسران کی تقرری، تبادلوں سے متعلق قانون سازی کا معاملہ

پولیس افسران کی تقرری، تبادلوں سے متعلق قانون سازی کا معاملہ

کراچی(اسٹاف رپورٹر )سندھ ہائی کورٹ میں محکمہ پولیس میں افسران کی تقرری، تبادلوں سے متعلق قانون سازی کا معاملہ ،عدالت نے آئندہ سماعت پر پئش رفت رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت 24 جنوری تک ملتوی کردی ۔جمعرات کو وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ، آئی جی سندھ کلیم امام کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت سندھ ہائی کورٹ میں ہوئی جہاں ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے سندھ کابینہ اجلاس کے منٹس پیش کیئے اس رپورٹ میں بتایا گیا کہ 13 نومبر کو کابینہ اجلاس میں پولیس رولز ایجنڈا کا حصہ تھا، کابینہ نے پولیس رولز کیلئے کمیٹی بنانے کا کہا تھا ،ایڈوکیٹ جنرل بھی کمیٹی کا حصہ ہونگے ،عدالت نے آئندہ سماعت پر پئش رفت رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت 24 جنوری تک ملتوی کردی ،درخواست گزار کا کہنا تھا کہ ڈیڑھ سال گزر گیا ہے توہین عدالت کی درخواست جواب نہیں دیا گیا،سندھ حکومت پولیس افسران کی تقرری, تبادلوں میں قانون سازی میں دلچسپی نہیں لے رہی ,7 ستمبر 2017 کو سندھ ہائی کورٹ نے سندھ حکومت کو واضح احکامات دیے,عدالت سندھ حکومت کو متعدد بار مہلت دے چکی,عدالتی فیصلے کی خلاف ورزی پر وزیراعلی اور آئی جی کے خلاف کارروائی کی جائے ،وزیر اعلی سندھ اور آئی جی کے خلاف توہین عدالت کے تحت کارروائی کی جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر