”سیاسی درجہ حرارت بڑھا تو پھر۔۔۔“ خواجہ سعد رفیق ایک مرتبہ پھر میدان میں آ گئے، حیران کن بات کہہ دی

”سیاسی درجہ حرارت بڑھا تو پھر۔۔۔“ خواجہ سعد رفیق ایک مرتبہ پھر میدان میں آ ...
”سیاسی درجہ حرارت بڑھا تو پھر۔۔۔“ خواجہ سعد رفیق ایک مرتبہ پھر میدان میں آ گئے، حیران کن بات کہہ دی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق وفاقی وزیر ریلوے اور پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ’یوٹرن‘ اب عمران خان کا برینڈ بن چکا ہے،سفارتی محاذ پر موجودہ حکومت نے شدید شرمندہ کیا،سیاسی درجہ حرارت بڑھ گیا تو خطرہ ہے کہ کہیں جمہوریت ڈی ریل نہ ہوجائے،حکمران خود پر ہی عدم اعتماد کا اظہار کر رہے ہیں ،ان سے ملک ہی نہیں سنبھالا جا رہا ۔

نجی ٹی وی کے مطابق لاہور پریس کلب میں خواجہ سلمان رفیق اور ممبر پنجاب اسمبلی یاسین سوہل کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کہتے ہیں کہ مجھے ٹی وی دیکھ کر روپے کی قیمت گرنے کا پتا چلا، سٹاک مارکیٹ روز کریش کرتی ہے لیکن کوئی سنبھالنے والا نہیں، پہلی بار ایسی حکومت دیکھی ہے جو 100 دن پورے ہونے پر کہتے ہیں کہ انتخابات قبل از وقت ہوسکتے ہیں یعنی خود پر ہی عدم اعتماد کررہے ہیں کہ ملک  سنھبالا ہی نہیں جارہا،جب بھی ووٹ کا مذاق اڑایا جائے گا اور عوام کا فیصلہ نہیں مانا جائے گا تو پھر اس طرح کے ٹوٹ بٹوٹ حکمران آئیں گے جن کو کام نہیں آتا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے جو بھی کہا یو ٹرن لیا، یوٹرن اب عمران خان کا برینڈ بن چکا ہے،سفارتی محاذ پر موجودہ حکومت نے شدید شرمندہ کیا ہے،   کشکول میں سعودی عرب کے علاوہ کسی نے سکہ نہیں ڈالا، سی پیک کے ساتھ کھلواڑ کیا جارہا ہے اور انہوں نے وہ سب کچھ کیا جو ہندوستان سی پیک کیخلاف نہ کرسکا۔

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ڈیڑھ سال سے ہمارے خلاف ثبوت ڈھونڈے جارہے ہیں، قیصر امین بٹ سے مجسٹریٹ تبدیل کراکے اپنی مرضی کا بیان لیا گیا ہے،ہائیکورٹ کے رولز کی دھجیاں اڑا کر بیان قلمبند کیاگیا، قیصر امین بٹ کے تین بیان ریکارڈ کیے جاچکے ہیں، ہمارےخلاف گواہی کیلئے قیدیوں پر تشدد کیا گیا، تحریک انصاف نے سیاسی انتقام کے سواء کچھ نہیں کیا، سیاسی درجہ حرارت بڑھ گیا تو خطرہ ہے کہ کہیں جمہوریت ڈی ریل نہ ہوجائے۔خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہمیانوالی اور دھابیجی ٹرینیں وزیراعظم اور صدر کو خوش کرنے کیلئے چلائی گئیں جو کہ صرف اور صرف خسارہ میں ہیں

،ہم نے 28 بار ٹرین کےکرائے کم کیے تھے لیکن انہوں نے تیل کی قیمتیں کم ہونے کے باوجود 19 فیصد بڑھائے ہیں، جتنی نئی ٹرینیں چلی ہیں وہ سب نقصان میں چلائی جارہی ہیں۔

مزید : قومی