پاکستان ٹیکسٹائل سیکٹر کامیابی سے چل رہا ہے، محمد احمد

       پاکستان ٹیکسٹائل سیکٹر کامیابی سے چل رہا ہے، محمد احمد

  

فیصل آباد(اے پی پی):وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کی روشنی میں حکومتی اقدامات کے باعث کئی سالوں کی بحرانی کیفیت کے بعد پاکستانی ٹیکسٹائل سیکٹرکی قسمت کا ستارہ جاگ اٹھاہے اور دیگر ممالک کی نسبت کورونا کے حوالے سے بہترین حکمت عملی کی وجہ سے کورونا کی عالمی وبا کے باعث بین الاقوامی خریدار دوسرے علاقائی ممالک کی بجائے پاکستان کا رخ کرنے لگے ہیں جس سے کرسمس اور نیو ایئر سمیت دیگر بر آمدی آرڈرز کی بھر مارہو چکی۔پاکستان ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد احمد نے اے پی پی سے بات چیت کے دوران کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر قومی معیشت کا انتہائی اہم ترین شعبہ ہے۔انہوں نے کہا کہ معیشت کے اس اہم ستون کا ملکی بر آمدات میں 60 فیصد یعنی 12.8 ارب ڈالر حصہ ہے مگر گزشتہ ادوار حکومت میں اسے مسلسل نظر انداز کیا گیا جس سے اس شعبہ کے مسائل بڑھتے گئے اور اس کے نتیجہ میں جہاں ٹیکسٹائل کی مصنوعات کی پیداوار میں کمی ہوئی وہیں کئی سالوں سے بر آمدی اہداف کا حصول بھی ممکن نہ ہوسکا۔ 

انہوں نے کہا کہ اب وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں حکومت نے پہلی بار اس ضرورت کا شدت سے احساس کیا ہے کہ اگر انڈسٹری کا پہیہ چلے گا تو ایکسپورٹ بڑھیں گی اور اگر ایکسپورٹ بڑھیں گی تو جہاں ملک کیلئے قیمتی زر مبادلہ حاصل ہوگا وہیں بیروزگاری کے خاتمہ اور ملکی خوشحالی میں بھی مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ امر بھی اطمینان بخش ہے کہ صوبائی وزیر صنعت پنجاب میاں اسلم اقبال بھی ٹیکسٹائل انڈسٹری کے مسائل کے حل میں خصوصی دلچسپی رکھتے ہیں اور انہوں نے اپٹما کی اپیل پر فوری واٹر چارجز،ایکسائز ڈیوٹی، بجلی، گیس، سوشل سکیورٹی کی جانب سے صنعتوں کے آڈٹ وغیرہ کے حوالے سے درپیش مسائل حل کرنے کی بھی یقین دہانی کروائی ہے۔انہوں نے کہا کہ اب نئے بر آمدی آرڈرز کے باعث ایک دن کیلئے بھی فیکٹریز کو بند کرنے کا متحمل نہیں ہوا جاسکتا۔انہوں نے کہا کہ ملک کو ایک بار پھر کورونا کی دوسری لہر میں شدت کا سامنا ہے اور روز بروز کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں مگر ٹیکسٹائل انڈسٹری موجودہ صورتحال کے دوران کورونا ایس او پیز کے حوالے سے حکومتی گائیڈ لائنز پر مکمل عملدر آمد کررہی ہے یہی وجہ ہے کہ تمام صنعتی ادارے اللہ کے خاص فضل و کرم سے اس وبا سے مکمل محفوظ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملکی معاشی ترقی کیلئے ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز حکومت سے بھرپور تعاون کریں گے۔انہوں نے کہا کہ بینک دولت پاکستان کے اقدامات کی وجہ سے موجودہ دور حکومت میں پہلی بار زر مبادلہ کے ذخائر ساڑھے 13 ارب ڈالر کی بلند ترین شرح پر پہنچے ہیں تاہم اگر ٹیکسٹائل خصوصا ایکسپورٹ سیکٹر کی سرپرستی جاری رکھی گئی تو ان ذخائر میں مزید اضافہ بھی ممکن ہے کیونکہ سب سے بڑا برآمدی شعبہ ٹیکسٹائل پوری استعداد کے مطابق کام کر رہا ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اگر اللہ پاک نے حالات کو سازگار رکھا تو ٹیکسٹائل ایکسپورٹ سیکٹر حکومتی معاشی استحکام میں اپنا بھرپور کردار ادا کرے گا۔

مزید :

کامرس -