سرکاری محکموں میں جنسی ہراسگی کے واقعات تشویشناک،جاوید قصوری

  سرکاری محکموں میں جنسی ہراسگی کے واقعات تشویشناک،جاوید قصوری

  

لاہور (نمائندہ خصوصی)امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب و صدر ملی یکجہتی کونسل پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ سرکاری محکموں میں جنسی ہراسگی کے واقعات تشویشناک ہیں۔ صوبائی محتسب کی رپورٹ کے مطابق دفاتر میں کرنے والی 4624خواتین نے دفاتر میں ہراساں کرنے کی درخواستیں جمع کروائی ہیں۔ حکومت کیسز کا فوری نوٹس لے اور ذمہ داران کو سخت سزادی جائے۔ 

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ عوام کو تحفظ فراہم کرنا حکومت کی اولین ذمہ داری ہوتی ہے۔ مگر بد قسمتی سے خواتیں کو ہراساں کرنے والوں کے خلاف کسی قسم کی کاروائی نہ کرنا عدم تحفظ کا باعث ہے۔ 

معاشرتی بے راہ روی اور بگاڑ پوری قوم کے لیے باعث شرم ہے۔ دین اسلام نے خواتین کو عزت، مقام و مرتبہ دیا ہے وہ کسی اور مذہب اور معاشرے میں نظر نہیں آتا۔ انہوں نے کہا کہ ملک و قوم کے مسائل دن بدن بڑھتے چلے جارہے ہیں۔ غربت کی وجہ سے لوگ خودکشیاں کررہے ہیں۔ حکمرانوں نے نا اہلی، بد انتظامی اور بے حسی کے تمام ریکارڈ تو ڑ دیے ہیں۔ وزیر اعظم کرپشن کے خلاف تو بہت باتیں کرتے ہیں مگر انہیں پشاور بی آرٹی منصوبے میں ہونے والے 2ارب 77کروڑ روپے کی بے قاعدگی دکھائی کیوں نہیں دیتی۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے پٹرولیم ندیم بابر کی جانب سے قومی خزانے کو نقصان پہنچنے کا اعتراف المیہ ہے۔ اس حوالے سے فوری نوٹس لیا جائے۔ نیب اور متعلقہ ادارے خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -