حکومت مینو فیکچرننگ گروتھ بڑھانے کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہے، ہمایوں اختر

حکومت مینو فیکچرننگ گروتھ بڑھانے کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہے، ہمایوں ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)پاکستان تحریک انصاف کے سینئر مرکزی رہنما و سابق وفاقی وزیر ہمایوں اختر خان نے کہا ہے کہ 70سے75فیصد ٹیکس آمدن مینو فیکچرننگ سے حاصل ہوتی ہے۔ حکومت مینو فیکچرننگ گروتھ کو بڑھانے کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہے۔ (ن) لیگ نے اپنے دور میں انتہائی مہنگی کمرشل قرضے لئے جنہیں اتارنا چیلنج سے کم نہیں، بہتر ہوتے معاشی اشاریوں کے اثرات بہت جلد عوام کی زندگیوں پربھی نمایاں ہوں گے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے  صنعتکاروں کے وفد سے ملاقات کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔

 ہمایوں اختر خان نے کہا کہ موجودہ حکومت نے اپنے سیاسی فائدے کو پس پشت دالتے ہوئے ملک و قوم کے مستقبل کو ترجیح دی اور اسی لئے اصلاحات کی کڑوی گولی نگلی جس سے بہتری کے آثار واضح ہو رہے ہیں۔ 

بقہ حکومتوں نے عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے ڈھنگ ٹپاؤ اور کاسمیٹکس پالیسیاں اپنائیں، ڈالر کو جان بوجھ کر اوور ویلیو رکھا گیا لیکن جب یہ اپنی اصل سطح پر واپس آیا تو پوری قوم کو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑا۔ ہمایوں اختر خان نے کہا کہ حکومت نے کنسٹرکشن کے شعبے کیلئے مراعاتی پیکج دیا ہے جس سے چالیس سے زائد شعبوں کو عروج حاصل ہو رہا ہے، اسی طرح مینو فیکچرننگ پر توجہ مرکوز کی گئی ہے کیونکہ یہ وہ شعبہ ہے جس سے نہ صرف 70سے 75فیصد ٹیکس آمدن حاصل ہوتی ہے بلکہ لاکھوں لوگوں کو روزگار کے مواقع بھی میسر آتے ہیں۔وفد نے ہمایوں اختر خان کو اپنے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے انڈسٹری کی بہتری کیلئے تجاویز بھی دیں جنہیں انہوں نے حکومتی ذمہ داران تک پہنچانے کی یقین دہانی کرائی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -