شیر باز خان مزاری بہادر سیاسی و مذہبی رہنما تھے، لیاقت بلوچ

شیر باز خان مزاری بہادر سیاسی و مذہبی رہنما تھے، لیاقت بلوچ

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان و سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے قومی رہنما شیر باز خان مزاری کے انتقال پر غم اور صدمہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحوم 1970تا1977میں قومی سیاست کے نامور اورآئین سازی وتحریک نظام مصطفی ؐ کے بہادر رہنما تھے۔ مرحوم مہذب،شائستہ،دیانتدار اور علم دوست شخصیت تھے۔پروفیسرغفور احمد اور شیرباز مزاری بہت گہرے دوست تھے۔دونوں کا باہم احترام کا رشتہ مثالی تھا۔لیاقت بلوچ نے وزیر اعظم عمران خان کے دو بیانات بہت اہم ہیں کہ ڈرگز اورنشے سے عارضی خوشی اور روحانیت سے دائمی خوشی و اطمینان ملتا ہے جبکہ جمہوریت میں جمہوری رویوں سے خوشی ملتی ہے۔ گورنر پنجاب ملتان کے بعد لاہور کے جلسہ کیلئے بھی مثبت موقف دے رہے ہیں۔،خود حکومت کے اندر پریشانیاں بڑھتی جارہی ہیں۔حکومتی ترجمان نے مارشل آرٹ مظاہرہ میں غیر معیاری اور پتلی ٹائیلیں توڑ دیں۔ عملاً حکومت بھی اس وقت اسی طرح ٹوڑ پھوڑ کادھندہ کررہی ہے۔حکومت نے تو اپنی نااہلی،ناکامی اور برے طرز حکمرانی سے عوام کے دل توڑ دیئے ہیں۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ منصورہ میں امیر جماعت اسلامی سراج الحق کی صدارت میں وسطی پنجاب کے اضلاع میں بلدیاتی انتخابات،عام انتخابات کی تیاریوں کا جائزہ لیا گیا۔

گوجرانوالا جلسہ عام کا بھی لائحہ بنا لیا گیا ہے۔جماعت اسلامی اپنے بیانیہ،منشور اور ترازو کے نشان کے ساتھ انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی۔ملک بھر میں کارکنان جماعت اسلامی کی حکمت عملی پر یکسو اور متحرک ہیں۔جماعت اسلامی ہی ان شاء اللہ ملک و ملت کو بحرانوں سے نجات دلائے گی۔ہماری جدوجہد اسلام کی حکمرانی اور عدل و انصاف کے نظام کے قیام کیلئے ہے۔اجلاس میں امیر العظیم،جاوید قصوری،سردار ظفر حسین خان،ذکر اللہ مجاہد اور بلال قدرت بٹ نے بھی شرکت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -