حکومت اپوزیشن کے جلسوں سے بوکھلا گئی: میاں افتخار حسین 

    حکومت اپوزیشن کے جلسوں سے بوکھلا گئی: میاں افتخار حسین 

  

 پبی (نما ئندہ پاکستان) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری و پاکستان ڈیوکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے ترجمان میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ ہمیں ادراک ہے کہ کورونا ایک وبائی مرض ہے لیکن سلیکٹڈ وزیراعظم کے سیاسی اور عمرانی کورونا کو ایک پل بھی ماننے کو تیار نہیں ان خیا لات کا اظہار انہوں نے پبی میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرے اور پبی پریس کلب کے سا منے احتجا جی مظا ہرین سے خطاب کرتے کیا احتجا جی مظا ہرے سے فضل مو لا چٹان ایڈو کیٹ پی پی پی ضلع نو شہرہ کے جنرل سیکر ٹری سعید اللہ محمد الیاس جے یو آئی تحصیل پبی کے امیر مفتی محب اللہ قو می وطن پار ٹی کے سیکر ٹری اطلا عات حضرت علی اے این پی ضلع نو شہرہ کے جنرل سیکر ٹری انجینئر حا مد علی عباس خان جے یو آئی ضلع نو شہرہ کے امیر قا ری اسلم مفتی حا کم علی نے بھی خطاب کیا  میاں افتخار حسین نے کہا کہ سلیکٹڈ وزیراعظم سے بڑاکورونا اس ملک کے لئے نہیں ہو سکتا،  حکومت کورونا کے پیچھے چھپنے کی ناکام کوشش کر رہی ہے پی ڈی ایم کے جلسوں میں عوامی سمندر دیکھ کر حکومت کے اوسان خطا ہوچکے ہیں،  پی ڈی ایم سلیکٹڈ وزیراعظم  کوہٹانے اور ملک کو بچانے تک اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے مشترکہ  عوامی جلسوں نے حکومت کے اوسان خطا کر دئیے ہیں اور اب حکومت اوچھے ہتکھنڈوں پر اتر آئی ہے، گجرانوالہ، کوئٹہ اور پشاور جلسوں کی راہ میں رکاوٹیں حائل کیں لیکن ملتان میں تو حکومت نے حد کردی  تھی، جلسہ گاہ میں پانی چھوڑا گیا اور منتظمین کو گرفتار کیا گیا، اس کے باوجود ساری دنیا نے دیکھا کہ جعلی حکومت سے تنگ عوام نے جلسے میں بھرپور شرکت کی اور ملتان کا گھنٹہ گھر چوک جلسہ گاہ کا منظر پیش کرنے لگا، ملتان جلسہ میں حکومتی روئیے کے خلاف پی ڈی ایم  نے مشترکہ فیصلے کے بعد ملک بھر میں احتجاج کی کال دی تھی اور آج ملک بھر میں سلیکٹڈ حکمرانوں کے غیر آئینی اور غیر قانونی روئیے کے خلاف عوام نے اپنا احتجاج ریکارڈ کیا۔ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم میں شامل تمام سیاسی جماعتیں ایک پیج پر ہیں اور اس بات پر متفق ہیں کہ اس جعلی حکومت کو ہٹانے کے لئے اپنا آئینی حق استعمال کرتے ہوئے جدوجہد جاری رکھیں گے، پی ڈی ایم  مطالبہ کرتی ہے کہ ملک میں از سر نو صاف شفاف اور  مداخلت سے  پاک انتخابات کا انعقاد کروایا جائے، ملک میں  آئین اور پارلیمان کی بالادستی کو یقینی بنایا جائے اورتمام اداروں کو اپنے دائرہ اختیار میں رہ کر اپنے فرائض سرانجام دینے ہوں گے ورنہ نتائج خطرناک ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ حکومت سے پہلے ملکی معیشت کو آسمان پر پہنچانے کے دعوے کرتے تھے آج انہوں نے ملک کو آئی ایم ایف کے ساتھ گروی رکھ دیا ہے، ملک کی معاشی پالیسیاں آئی ایم ایف سے تیار ہو کر آرہی ہیں جس کی بدولت ڈالر کی قیمت آسمان سے باتیں کر رہی ہے، ملک بھر میں مہنگائی عروج پر ہے، ضروریات زندگی کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہے، غریب عوام دو وقت کی روٹی کے لئے ترس رہی ہے انہوں نے کہا کہ 90 دن میں کرپشن کا خاتمہ کرنے والوں نے ملک معیشت اور خزانے پر ڈاکہ ڈال کر مثالیں قائم کر دی ہیں،   بلین ٹری سونامی، مالم جبہ سیکنڈل، بی آر ٹی، چینی سکینڈل اور پٹرول سیکنڈل کرپشن کی داستانیں ہیں، اب تو عدالت نے بھی کہہ دیا ہے کہ بلین ٹری سونامی کے اربوں درخت کہاں پر لگائیں ہیں، عدالت کو پی ٹی آئی حکومت کے باقی  پراجیکٹس کا بھی  نوٹس لینا چاہیئے اور عوام کے سامنے ان کی کرپشن کو بے نقاب کرنا چاہیئے، نیب کو سیاسی مخالفین کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے، کرپشن خاتمے کے دعوے ڈراموں کے سوا کچھ نہیں ہے۔ وزراء  اور مشیروں کی فوج بھرتی کر رکھی ہے جو سارا دن ٹی وی  پر بیٹھ کر جھوٹ بولتے ہیں اور سیاسی مخالفین کی تضحیک کر کے عوام کو گمراہ کر نے کی کوشش کرتے  ہیں۔انہوں نے کہا کہ لا ہور کا جلسہ ضرور ہو گا تمام کار کنان حکو متی رکاوٹوں کو توڑ کر جلسہ گاہ پہنچ جا ئنگے انہوں نے پشاور کا جلسہ بہت کا میاب قرار دیا اور کہا کہ حکو مت نے جلسہ نا کام بنا نے کے لئے بے انتہا روکا وٹیں کھڑی کی تھیں لیکن اس کے با و جود کار کنوں نے پید ل سفر کر کے جلسہ گاہ پہنچ گئے تھے انہوں نے کہا کہ 8 دسمبر کو اسلام آباد میں پی ڈی ایم قا ئدین کا اجلاس ہے جس میں آئندہ کے لئے لا ئحہ عمل مر تب کر ینگے 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -