انڈیا میں ہمارا مستقبل نہیں،پاکستان سے انڈیا گئے 11خاندان واپس پاکستان لوٹ آئے

انڈیا میں ہمارا مستقبل نہیں،پاکستان سے انڈیا گئے 11خاندان واپس پاکستان لوٹ ...
انڈیا میں ہمارا مستقبل نہیں،پاکستان سے انڈیا گئے 11خاندان واپس پاکستان لوٹ آئے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ کے گیارہ خاندان کچھ عرصہ قبل بھارت منتقل ہوئے تھے تاہم بھارت کے بہیمانہ سلوک پر اب وہ واپس پاکستان لوٹ آئے ہیں۔ انڈپینڈنٹ اردو کے مطابق سندھ کے ضلع سانگھڑکے ایک چھوٹے سے گاوں کے بے زمین کسانوں پر مشتمل ایک خاندان سمیت صوبے کے تین اضلاع سے کچھ عرصہ قبل بھارت کے شہر نئی دہلی منتقل ہونے والے 11 ہندو خاندانوں کے 46 افراد کو واپس پاکستان پہنچ گئے۔ واپسی پر ان افراد کا واہگہ بارڈر پر بہترین استقبال کیا گیا۔واپس پہنچنے والے خواتین و افراد میں سے 15 کا تعلق سانگھڑ، 19 کا میرپورخاص اور 10 کا تعلق ٹنڈو اللہ یار سے ہے۔ وطن واپسی کے بعد نوجوان پرجوش انداز میں ’پاکستان زندہ باد‘ کے نعرے لگاتے رہے۔ بھارت سے واپس آنے والی جمنا کچھی کا کہنا تھا کہ انہوں نے مذہبی رسومات کے لیے بھارتی ویزا لیا تھا، کئی مہینے نئی دہلی کے ایک پناہ گزین کیمپ میں رہے، جہاں کوئی سہولت نہیں تھی، کھانا بھی پورا نہیں ملتا تھا۔ وہاں کے لوگ ہمیں پاکستانی کہہ کر پکارتے تھے، ہم وہاں خود کو کمتر سمجھتے تھے۔پھرکورونا لاک ڈاون کے باعث حالات مزید خراب ہوئے تو ہم نے وطن واپس آنے کا فیصلہ کیا۔بھارت جانے والے ایک نوجوان فقیرو کچھی نے بتای کہ ہم ہندو ہیں مگر بھارتی ہندو ہمیں ہندو کی بجائے پاکستانی سمجھتے ہیں۔ ہم شلوار قمیض پہنتے ہیں، اس لباس کو دیکھ کر لوگ ہمیںدہشت گرد بلاتے تھے تو ہم نے سوچا یہاں مستقبل نہیں ہے اس لیے واپس آگئے۔

مزید :

قومی -