خیبرپختونخوامیں جج کے خلاف زیادتی کے مقدمے کا ڈراپ سین ہوگیا

خیبرپختونخوامیں جج کے خلاف زیادتی کے مقدمے کا ڈراپ سین ہوگیا
خیبرپختونخوامیں جج کے خلاف زیادتی کے مقدمے کا ڈراپ سین ہوگیا

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سنئیر سول جج  لوئر دیر کے خلاف مبینہ زیادتی کے مقدمے کا ڈراپ سین ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق تفتیشی ٹیم نے تیمر گرہ سے تعلق رکھنے والے سینئر جج پر لگائے گئے الزامات کو بے بنیاد اور من گھڑت قرار دیتے ہوئے رپورٹ عدالت میں جمع کروادی ہے۔ تحقیقات میں خاتون عظمی بخاری  کا کریمنل ریکارڈ بھی سامنے آیا، جب کہ یہ بھی انکشاف ہوا کہ الزام لگانے والی خاتون کے خلاف پنجاب میں آٹھ ایف آئی آرز درج ہیں۔خاتون پنجاب میں رکن پنجاب اسمبلی فیصل نیازی سمیت دس افراد کے خلاف زیادتی کے جھوٹے مقدمے درج کرواچکی،خاتون مقدمے درج کرواکر ان کو بلیک میل کرتی اور بھاری رقم وصول کرتی تھی۔پنجاب پولیس نے مذکورہ خاتون کا کریمنل ریکارڈ خیبرپختون خوا پولیس کے حوالے کردیا ہے۔ خاتون نے لوئر دیر میں مقدمہ درج کرواتے وقت اپنا نام دعا بتایا تھا۔

دوسری جانب تفتیشی ٹیم کے مطابق میڈیکل رپورٹ میں بھی خاتون زیادتی ثابت نہ ہوئی اور نہ ہی وہ اپنے حق میں کوئی ثبوت پیش کرسکی ہے۔ متعلقہ جج کی درخواست ضمانت منظور ہونے پر اسے رہا کیا گیا ہے  ۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -خیبرپختون خواہ -