فیصل آباد، گھر میں کام کرنیوالی 16سالہ ملازمہ مبینہ طور پر تشدد سے ہلاک، وزیراعلٰی کا نوٹس رپورٹ طلب

فیصل آباد، گھر میں کام کرنیوالی 16سالہ ملازمہ مبینہ طور پر تشدد سے ہلاک، ...

  

           فیصل آباد (کرائم رپورٹر) فیصل آباد میں معروف صنعتکار کے گھر میں کام کرنیوالی 16سالہ ملازمہ کوو مبینہ طور پر قتل کر دیا گیا وزیر اعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیکر واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی جبکہ پولیس نے تین ملزمان کو حراست میں لے لیا تفصیلات کے مطابق تھانہ ملت ٹاؤن کے علاقہ شیخوپورہ روڈ پر پیراڈائز ویلی کے رہائشی صنعتکار اور اس کے ملازمین نے اپنی گھریلو ملازمہ 16سالہ ماریہ بی بی کو مبینہ طور پر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنا کر موت کے گھاٹ اتار دیا اور نعش کو نجی ہسپتال لے گئے پولیس نے نعش کو تحویل میں لیکر ہسپتال منتقل کر دیا پولیس رپورٹ کے مطابق مقتولہ ماریہ کی گردن پر تشدد کے واضح نشانات ہیں مقتولہ ماریہ کے والد کا کہنا ہے کہ میں نے اپنی بیٹی کو معروف صنعتکار کے گھر ملازمت پر چھوڑا تھا میری بیٹی کو قتل کیا گیا جبکہ مالکان میری بیٹی کے قتل کو طبعی موت قرار دینے کی کوشش کر رہے ہیں، 16 سالہ گھریلو ملازمہ ماریہ کو مالکان کی جانب سے بیہمانہ تشدد کا نشانہ بھی بنایا جاتا تھا، معروف صنعتکار اور ان کے بیٹے و ملازم راشدسمیت پانچ لوگ میری بیٹی کے قاتل ہیں جبکہ مقتولہ ماریہ کی بہن کا کہنا تھا کہ میں بھی انکے گھر کام کرتی تھی، مجھ سے بھی زیادتی کی کوشش گئی، سولہ سالہ گھریلو ملازمہ ماریہ کا پوسٹمارٹم مکمل ہونے کے بعد لاش ورثاء کے حوالے کر دی گئی سٹی پولیس آفیسر کے نوٹس لینے پر تھانہ ملت ٹاؤن پولیس نے صنعتکار اور اس کے ملازمین راشد، ببلو اور نعمان مسیح کے خلاف ملازمہ کے قتل کی ایف آئی آر درج کر کے تین ملزمان کو گرفتار کر لیا  پولیس تاحال مرکزی ملزم کو گرفتار کرنے میں ناکام ہے، ملزمان سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

ملازمہ قتل 

مزید :

صفحہ اول -