پنجاب کی بیوروکریسی سے ریٹرننگ افسران لینے کے خلاف درخواست ،نوٹسز جاری

پنجاب کی بیوروکریسی سے ریٹرننگ افسران لینے کے خلاف درخواست ،نوٹسز جاری
پنجاب کی بیوروکریسی سے ریٹرننگ افسران لینے کے خلاف درخواست ،نوٹسز جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) لاہور ہائیکورٹ نے عام انتخابات کے لیے پنجاب کی بیوروکریسی سے ریٹرننگ افسران لینے کے خلاف دائر درخواست پر سماعت  کی ،عدالت نے الیکشن کمیشن سمیت دیگر کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا 

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے جسٹس علی باقر نجفی نے ایک شہری کی درخواست پر سماعت کی ،درخواستگزار نے مؤقف اختیار کیا کہ الیکشن کمیشن نے 8 فروری کو عام انتخابات کا اعلان کیا ہے،درخواست میں۔الیکشن کمیشن نے ریٹرننگ افسران کے لیے حکومت سے رابطہ کیا ہے۔نگران حکومت سے غیر جانبدار اور شفاف انتخابات کی امید نہیں کی جا سکتی۔

درخواستگزار نے استدعا کی کہ عدالت الیکشن کمیشن کا آر اوز اور ڈی آر اوز کے لیے بیورو کریسی کی تعیناتی کا فیصلہ غیر قانونی قرار دے ۔

دوران سماعت درخواستگزار کے وکیل نے بتایا کہ ریٹرننگ افسر اگر عدلیہ سے ہونگے تو عوام کا اعتماد بڑھے گا ،عدالت نے ریمارکس دیے کہ عدلیہ کے پاس پہلے ہی کیسز کی تعداد بہت زیادہ ہے جس پر درخواستگزار کے وکیل نے کہا کہ عدالت الیکشن کمیشن کو عام انتخابات کے لیے جوڈیشری سے آر اوز لینے کے لیے رابطے کی ہدایت کرے ،عدالت نے متعلقہ فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے سماعت 12دسمبر تک ملتوی کردی۔