”میں  خوشیوں اور شادمانیوں سے سرفراز ہو رہا ہوں“اپنے ہر دن کا آغاز اسی طرح کیجیے، آپ ایک مینارۂ مسرت و نور کا روپ دھار لیں گے

 ”میں  خوشیوں اور شادمانیوں سے سرفراز ہو رہا ہوں“اپنے ہر دن کا آغاز اسی طرح ...
 ”میں  خوشیوں اور شادمانیوں سے سرفراز ہو رہا ہوں“اپنے ہر دن کا آغاز اسی طرح کیجیے، آپ ایک مینارۂ مسرت و نور کا روپ دھار لیں گے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مصنف: ڈاکٹر جوزف مرفی
مترجم: ریاض محمود انجم
قسط:123
خوشیوں کا انتخاب کیسے کیا جائے:
اب خوشیوں کا انتخاب کرنے کا آغاز کر دیجیے۔ اس کا طریقہ اور ترکیب ذیل میں ملاحظہ فرمایئے۔ جب آپ صبح بیدارہوتے ہیں تو خود سے کہیے: ”ایک پاکیزہ، مقدس اور روحانی طریقہ کار اور ترکیب، آج بلکہ میری روزمرہ زندگی کی نگرانی پر مامور ہے۔ آج کے دن، سب عوامل میری بہتری اور خوشی کیلئے باہم مل کر کام کر رہے ہیں۔ یہ میری زندگی کا ایک نیا اور شاندار دن ہے۔ میری زندگی میں ایسا شاندار دن کبھی نہیں آئے گا۔ مجھے اپنے اس دن کی تمام مصروفیات کے ضمن میں روحانی طور پر راہنمائی میسر ہوتی ہے اور جو کچھ بھی میں کرتاہوں، وہ میری خوشحالی اور بہتری کا پیغام لاتا ہے۔ پاکیزہ، مقدس اور روحانی محبت، چاہت مجھے اپنے حصار میں لے لیتی ہے، مجھے اپنی آغوش میں لے لیتی ہے، میری ذات میں سرایت ہو جاتی ہے اور میں مزید سکون اور طمانیت میں کھو جاتا ہوں۔ جب بھی میری توجہ مثبت، صحیح اور تعمیری عناصر سے ادھر ادھر بھٹک جاتی ہے، تو میں فوراً ہی اپنی توجہ، نیک، اچھے، مثبت اور تعمیری عناصر اور عوامل کی طرف منتقل کر دوں گا۔ میں ایک ایسا روحانی اور وہ ذہنی مقناطیس ہوں، جس کے باعث میں ان تمام اشیاء کو اپنی طرف متوجہ اور ملتفت کر لیتا ہوں جو میرے لیے باعث رحمت و نعمت ہیں اور میرے لیے خوشحالی کا پیغام لاتی ہیں۔ میں آج کے دن کی تمام مصروفیات، معاملات میں شاندار کامیابی حاصل کر رہا ہوں اور پھر میں آج کے تمام دن قطعی اور حتمی طورپر خوشیوں اور شادمانیوں سے سرفراز ہو رہا ہوں۔“
اپنے ہر دن کا آغاز اسی طرح کیجیے۔ اس طور آپ اپنے لیے خوشیاں اور مسرتیں تلاش کر لیں گے اور آپ ایک مینارۂ مسرت و نور کا روپ دھار لیں گے جس سے ہر طرف خوشیاں اور روشنیاں پھوٹتی ہیں۔
ایک شخص نے ہمیشہ خوش رہنا اپنی عادت بنا لی:
کافی برس پہلے میں آئرلیند (Ireland) کے مغربی ساحل پر واقع کونیمرا (Connemarra) کے ایک کسان کے گھر ٹھہرا۔ یہ کسان ہمیشہ گانا گاتا رہتا اور سیٹیاں بجاتا رہتا اور پر ظرافت باتیں کرتے رہتا۔ میں نے اس کسان سے اس کی خوشی و مسرت کا راز پوچھا تو اس نے یہ جواب دیا:
”میں نے ہمیشہ خوش رہنے کو اپنی عادت بنا لیا ہے۔ ہر صبح جاگنے کے بعد اور ہر رات سونے سے قبل، میں اپنے خاندان، فصلوں، مویشی کو برکت کی دعا دیتا ہوں اور شاندار بہترین فصل کیلئے خداتعالیٰ کا شکر ادا کرتا ہوں۔“
اس کسان نے تقریباً چالیس برس سے اس طرزعمل کو اپنا رکھا تھا۔ جیسا کہ آپ کو معلوم ہے کہ جن خیالات و تصورات کو بار بار اور منضبط طریقے کے ذریعے دہرایا جائے، وہ ہمارے تحت الشعوری ذہن میں نقش ہو جاتے ہیں اور ہماری عادت بن جاتے ہیں۔ اسے یہ معلوم ہو گیا تھا کہ خوشی اور خوشی کا انتخاب و حصول، محض ایک عادت ہے۔) جاری ہے) 
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے۔ ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں)

مزید :

ادب وثقافت -