ٹرانسپورٹ کرایوں میں کمی جیسے اقدامات تسلسل کیساتھ مستقبل میں بھی جاری رکھیں گے ،شہباز شریف

ٹرانسپورٹ کرایوں میں کمی جیسے اقدامات تسلسل کیساتھ مستقبل میں بھی جاری ...

لاہور(جنر ل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ عوام کے مفادات کا تحفظ اور انہیں ریلیف کی فراہمی ریاست کی ذمہ داری ہے اورپاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ریکارڈ کمی کے ثمرات عوام تک پہنچانے میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھے گی، ٹرانسپورٹ کرایوں میں کمی کے حوالے سے کئے جانے والے موثر اقدامات تسلسل کے ساتھ مستقبل میں بھی جاری رکھے جائیں گے اور ان اقدامات کی مانیٹرنگ جاری رہے گی، عوام کو ریلیف کی فراہمی کیلئے کئے جانے والے اقدامات پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا اور کسی کو عوام کا استحصال نہیں کرنے دوں گا۔وہ جمعہ کے روز یہاں ویڈیو کانفرنس کے ذریعے سول سیکرٹریٹ میں صوبائی پرائس کنٹرول کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔ ویڈیو لنک اجلاس کے دوران پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ریکارڈ کمی کے تناظر میں ٹرانسپورٹ کرایوں اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے صوبے بھر میں کئے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیاگیا اور حکومتی اقدامات کے نتیجہ میں ٹرانسپورٹ کرایوں اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ صوبائی وزراء چوہدری محمد شفیق، بلال یاسین، ڈاکٹر فرخ جاوید، چیف سیکرٹری اور متعلقہ سیکرٹری صاحبان نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکو مت نے فوری اقدامات کرکے عوام کو ریلیف کی فراہمی کیلئے ٹرانسپورٹ کرایوں میں اسی تناسب سے کمی کی ہے جس شرح سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی واقع ہوئی ہے جبکہ ٹرانسپورٹ کے نئے مقررکردہ کرایوں کی خلاف ورزی پر سخت ایکشن لینے کے حوالے سے صوبائی انتظامیہ اور پولیس حکام کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ وزیراعلیٰ نے ویڈیو کانفرنس کے دوران ہدایت کی کہ اوورچارجنگ پر اڈہ مینجرز کے خلاف سخت کارروائی کی جائے اور نئے مقررکردہ کرایوں سے زائد وصولی پر اڈہ مینجرز کی گرفتاری بھی عمل میں لائی جائے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب حکومت کے اس ضمن میں موثر اقدامات جاری رہنے چاہئیں۔ عوام کو ناجائز منافع خوروں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبائی پرائس کنٹرول کمیٹی روزانہ کی بنیاد پر ٹرانسپورٹ کرایوں اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے کئے جانیوالے اقدامات پر عملدرآمد کا جائزہ لے اور اس ضمن میں تمام ضروری اقدامات اٹھائے جائیں۔ اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ گزشتہ روز اوورچارجنگ پر 155 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ 530 گاڑیاں بند کی گئی ہیں اور مجموعی طو رپر 14 لاکھ روپے جرمانہ کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت اجلاس میں انفراسٹرکچر کے منصوبوں خصوصاًسادرن رنگ روڈ پراجیکٹ اورسٹریٹ لائٹس کومرحلہ وار پروگرام کے تحت سولرپینلز پر منتقل کرنے کے پروگرام کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں سٹریٹ لائٹس کومرحلہ وارپروگرام کے تحت سولر پر منتقل کرنے کے پروگرام کی اصولی منظوری دی گئی۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تیزرفتار ترقی کیلئے جدید اور معیاری انفراسٹرکچر ناگزیر ہے ۔پنجاب حکومت صوبے بھر میں انفراسٹرکچر کی بہتری کے منصوبوں پر اربوں روپے خرچ کررہی ہے ۔ ترقیاتی منصوبوں کی شفاف ،معیاری اورتیزرفتاری سے تکمیل پنجاب حکومت کی پالیسی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ٹھوس اور مربوط حکمت عملی کے ذریعے صوبے بھر میں ذرائع نقل وحمل کو بہتر بنایا جارہا ہے ۔بہتر ذرائع مواصلات،معاشی ، تجارتی اورسماجی سرگرمیوں کے فروغ کا باعث بنتے ہیں ۔صوبے بھر میں انفراسٹرکچر کے شاہکار برق رفتاری سے مکمل کیے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ انفراسٹرکچر کے بڑے منصوبوں کی معیاری اوربروقت تکمیل سے پنجاب میں ترقی کے نئے دور کا آغاز ہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ لاہور رنگ روڈسادرن لوپ کا منصوبہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔منصوبے پر تیزرفتاری سے کام کرنے کی ضرورت ہے ۔لاہور رنگ روڈ کے نادرن لوپ کی تعمیر سے شہریوں کو آمدو رفت کی بہتر سہولیات میسر آئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کی شفاف،معیاری اوربرق رفتاری سے تکمیل پنجاب حکومت کا طرہ امتیاز ہے۔لاہور رنگ روڈ کے سادرن لوپ منصوبے کی تعمیر میں بھی معیار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں میں ہارٹی کلچر کو فروغ دیاگیا ہے اورترقیاتی منصوبوں کو ہارٹی کلچر کے ذریعے دیدہ زیب بنایا گیا ہے ۔ڈی جی ایل ڈی اے احدچیمہ نے صوبائی دارالحکومت میں سٹریٹ لائٹس کے پروگرام کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ لاہورکی سٹریٹ لائٹس کیلئے مانگا منڈی کے قریب علیحدہ سولر پارک بنانے کا منصوبہ بنایاگیا ہے۔منصوبے سے 20میگاواٹ تک بجلی حاصل ہو گی۔چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری خزانہ، کمشنر لاہور ڈویژن، ڈی جی ایل ڈی اے اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

لاہور(اے این این )وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت گزشتہ روزیہاں صوبے میں نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں پنجاب بھر میں انتہا پسندی ، فرقہ واریت، اور دہشت گردی کے خاتمے کے لئے تعلیمی اداروں میں رواداری ،امن اور بھائی چارے کے فروغ کے حوالے سے مضمون نویسی اور تقریری مقابلے کرانے کے فیصلے کی منظوری دی گئی ۔ تحصیل ،ضلع، ڈویژن اور صوبائی سطح پر مقابلے منعقد کرائے جائیں گے۔مقابلوں میں بہترین مضامین و تقاریر پرطلبا وطالبات میں نقد انعامات تقسیم کئے جائیں گے۔اجلاس کے دوران عوام کے جان ومال کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نیشنل ایکشن پلان ملک سے دہشت گردی کے خاتمے کا موثر متفقہ لائحہ عمل ہے ۔صوبے میں نیشنل ایکشن پلان کے تحت فوری نوعیت کے اقدامات اٹھائے گئے ہیں ۔ وزیراعلیٰ نے اہم مقامات کی سکیورٹی مزید سخت کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ صوبے کے داخلی و خارجی راستوں کی کڑی نگرانی کی جائے ۔موٹروے کے داخلی اور خارجی راستوں کیلئے وضع کردہ پلان پر سختی سے عملدر آمدیقینی بنایا جائے ۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ سالانہ امتحانات کے خاتمے کے بعد تعلیمی اداروں میں رواداری ، امن اور بھائی چارے کے فروغ کے حوالے سے مضمون نویسی اور تقریری مقابلوں کا اہتمام کیا جائے اس عمل سے انتہاء پسندی، فرقہ واریت اور دہشت گردی کے خاتمے میں مدد ملے گی۔انہوں نے کہاکہ تعلیمی نصاب میں رواداری ،برداشت ،محبت ، بھائی چارے اور امن جیسے اسلام کے سنہری اصولوں کو شامل کرنے کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں۔ تعلیمی اداروں میں نان ٹیچنگ سٹاف کو کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لئے خصوصی معیاری تربیت فراہم کی جائے ۔کابینہ کمیٹی برائے امن وامان صوبے میں قانون کی عملداری اور عام آدمی کو انصاف کی فراہمی یقینی بنانے کے حوالے سے متحرک و فعال کردارادا کرے۔وزیراعلیٰ نے صوبائی وزیر داخلہ اور انسپکٹر جنرل پولیس کو صوبے کے داخلی و خارجی راستوں میں کئے جا نے والے سکیورٹی انتظامات کاخود موقع پر جاکر جائزہ لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ پولیس جرائم پیشہ افراد کی سرکوبی کے لئے جانفشانی سے فرائض سرانجام دے ، عام آدمی کو انصاف کی فراہمی میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔انہوں نے کہاکہ موجودہ صورتحال کے تناظر میں غیر معمولی اقدامات اٹھائے گئے ہیں ۔فرقہ واریت اور انتہاء پسندی کے خاتمے کے لئے قوانین میں ضروری ترامیم کر کے سزائیں مزید سخت کی گئی ہیں۔ مذہبی منافرت پر مبنی لٹریچر کی روک تھام، لاؤڈ سپیکر کے ناجائز استعمال ، وال چاکنگ کی پابندی کے قانون پر عملدرآمد کے حوالے سے موثر اقدامات جاری رکھے جائیں،خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز قانون کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے۔ اجلاس میں صوبے میں نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات، امن و امان کی مجموعی صورتحال اور سکیورٹی انتظامات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔صوبائی وزراء کرنل (ر) شجاع خانزادہ، رانا مشہود احمدخان، مجتبیٰ شجاع الرحمن،عطا مانیکا، ایم این اے حمزہ شہبازشریف، معاونین خصوصی رانا مقبول، عزم الحق، ارکان صوبائی اسمبلی رانا ثناء اللہ، زعیم حسین قادری، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس متعلقہ سیکرٹریز اور اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

مزید : صفحہ اول