مقدمات کی سکروٹنی ہو رہی ہے،فوجی عدالتیں جلد کام شروع کر دیں گی ،پرویز رشید

مقدمات کی سکروٹنی ہو رہی ہے،فوجی عدالتیں جلد کام شروع کر دیں گی ،پرویز رشید

 اسلام آباد( آن لائن ،اے این این)وزیراطلاعات ونشریات پرویزرشیدنے کہاہے کہ عمران خان کے استعفوں کی کہانی بڑی دلچسپ ہے وہ مطالبات کا آغازوزیراعظم کے استعفے سے کرتے، راضی ایس ایچ او کے استعفے پر ہو جاتے ہیں، میں نے زندگی میں اتنے کوٹ نہیں بدلے جتنے عمران خان بیان بدل چکے ہیں ، این اے 122 میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوچکا ہے ، فوجی عدالتیں جلد کام شروع کردیں گی،انہیں بھیجے جانے والے مقدمات کی سکروٹنی ہورہی ہے ، پاکستان کو خطروں سے باہر نکل کر معمول کی زندگی کی طرف واپس آرہا ہے، قوم 23 مارچ کوفخر کے ساتھ مسلح افواج کی مشترکہ پریڈ دیکھے گی ،روا ں سال چین کے صدر سمیت دوست ممالک کے کئی سربراہان پاکستان کا دورہ کرینگے۔اسلام آباد میں ایک تقریب میں شرکت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز رشید نے کہا کہ افغان جنگ نے ہمیشہ پاکستان کو نقصان پہنچایا اور بے شمار مسائل سے دوچار کیا ہے۔ ہمارے خطے میں ہونے والی جنگوں میں مذہب کو استعمال کیا گیا جس کے سنگین نتائج نکلے ہیں۔ پاکستان ایسا نہیں تھا جیسا آج ہے۔ انہوں نے کہا کہ آمریتوں نے ہمیشہ ملکوں کو نقصان پہنچایا اٹلی نے جرمنی، مسولینی نے اٹلی اور جرمن فرانسکو نے سپین کو تباہ کیا، صدام حسین نے عراق کا حشر نشر کیا، پاکستان بھی دورے آمریت میں تقسیم ہوا، جرمنی اور اٹلی کو جمہوریت نے اکٹھا کیا اور ترقی کی جمہوریت کے باعث سپین میں بھی بہتری آئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان بھی ایک آمر کے ساتھی رہے اور پرویز مشرف کے غیر آئینی ریفرنڈم کیلئے ووٹ مانگتے رہے اسی ریفرنڈم کی طاقت سے پرویز مشرف نے پاکستان کو مسائل اور مشکلات سے دوچار کیا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 122 میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوچکا ہے یہ اسی وقت ہوگیا تھا جب عمران خان کی درخواست پر اس حلقے میں دوبارہ تھیلے کھولے گئے جس کے نتیجے میں ایاز صادق کے ووٹوں میں اضافہ اور عمران خان کی ووٹوں میں کمی ہوئی۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان نے جسٹس کاظم علی ملک کے الیکشن ٹریبونل پر اعتماد کا اظہار کیا تھا جس نے لوکل کمیشن بنا کر این اے 122میں ووٹوں کی جانچ پڑتال کرائی جب عمران خان ہار گئے تو الیکشن ٹریبونل پر عدم اعتماد کا اظہار کردیا اور لوکل کمیشن کے خلاف درخواست جمع کروادی۔ اب پھر عمران خان نے الیکشن ٹریبونل پر اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ میں نے زندگی میں اتنے کوٹ نہیں بدلے جتنے عمران خان بیان بدل چکے ہیں وہ ہر روز نئی بات کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان نے موجودہ الیکشن کمیشن کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا تھا اور الیکشن کمیشن پر بدترین دھاندلی کے الزامات لگاتے رہے ہیں اور پھر شکایات درج کرانے اسی الیکشن کمیشن کے پاس گئے ہیں اور اس کی تعریف کی ہے۔ عمران خان کب کسی کی تعریف اور کب تنقید کرتے ہیں اس کا کوئی پتہ نہیں چلتا۔

مزید : صفحہ اول