سلامتی کونسل میں بھارت کو مستقل نشست ملنا آسان کام نہیں ،مسعود خان

سلامتی کونسل میں بھارت کو مستقل نشست ملنا آسان کام نہیں ،مسعود خان

 نیویارک(اے این این)اقوام متحدہ میں پاکستان کے سبکدوش مندوب مسعود خان نے کہا ہے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں بھارت کو مستقل رکنیت ملنا آسان کام نہیں،یہ پیچیدہ مسئلہ ہے،امریکی خواہش کے باوجود جنرل اسمبلی سلامتی کونسل میں توسیع کے لئے تیار نہیں ہے،صدر اوبامہ نے اپنے پہلے دور میں بھارت کو حمایت کی یقین دھانی کرائی تھی،چین پاکستان کا دوست اس کی حمایت بارے بھارت خوش فہمی کاشکار ہے،اتار چڑھاؤ کے باوجود ان دنوں پاک امریکہ تعلقات بہتر ہیں۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے نیویارک میں کشمیری کمیونٹی کی جانب سے اپنے اعزاز دئیے گئے الوداعی عشائیہ کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔انھوں نے کہا کہ امریکی خواہش کے باوجود بھارت کو سلامتی کونسل کی مستقل نشست ملنا آسان کام نہیں ہے یہ مسئلہ پیچیدہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سلامتی کونسل میں توسیع کے لئے تیار نہیں ہے۔جنرل اسمبلی چاہتی ہے کہ جو بھی نئی سلامتی کونسل بنے وہ سب کی نمائندہ ہو جس میں جنرل اسمبلی کے عام اراکین کو نمائندگی ملنی چاہئے۔یہ نہیں ہونا چاہئے کہ جنگ عظیم کے بعد جو فیصلے ہوتے تھے ان کو طوالت دی جائے اور اسے دہرایا جائے۔ مسعود خان نے کہا کہ امریکی صدر نے اپنے پہلے دورے میں بھی بھارت کو سلامتی کونسل کا رکن بنانے میں تعاون کی یقین دہانی کرائی تھی۔ انھوں نے کہا کہ یہ امریکہ کا موقف ہے۔ لیکن، مسئلہ اتنا آسان نہیں۔اقوام متحدہ کے کئی اراکین سمجھتے ہیں ہیں کہ کوئی بھی فیصلے ایسے نہیں ہونے چاہئیں، جو ان کی نمائندگی نہ کرتے ہوں۔مسعود خان نے چین کی حمایت سے متعلق بھارت کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ میں اس کی زیادہ تفصیل میں نہیں جانا چاہتا لیکن چین کی حمایت کے معاملے پر بھارت خوش فہمی کا شکار ہے، پاکستان اور چین کے دیرینہ تعلقات ہیں۔انھوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں اتار چڑھاؤ آتا رہتا ہے لیکن ان دنوں صورتحال کافی بہتر ہے۔ہمارے تعلقات مضبوط ہو رہے ہیں، نہ صرف سیاسی سطح پر بلکہ معاشی اور تجارتی سطح پر بھی۔ پاکستانی کمیونٹی کو بھی اس سلسلے میں اپنی کوششیں تیز کر دینی چاہئے، تاکہ یہ تعلقات مزید مضبوط ہوں

مزید : صفحہ اول