جوڈیشل افسران کی بیرون ممالک ٹریننگ کیلئے سکالر شپس کا انتظام کیا جائے،ہائیکورٹ

جوڈیشل افسران کی بیرون ممالک ٹریننگ کیلئے سکالر شپس کا انتظام کیا ...

لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس سید منصور علی شاہ نے پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کی انتظامیہ کوہدایت کی ہے کہ جوڈیشل افسران کے بیرون ممالک ٹریننگ کیلئے بھی اسکالر شپس کا انتظام کیا جائے۔ انہوں نے یہ ہدایت پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں جنرل ٹریننگ پروگرام2015 کے مختلف پہلوؤں کا جائزہ لینے کیلئے جج صاحبان اور دیگر فیکلٹی ممبران کے غیر رسمی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی ، اس موقع پر عدالت عالیہ کے جسٹس عائشہ اے ملک، جسٹس شاہد وحید، جسٹس شہزادہ مظہر، جسٹس عابد عزیز شیخ، جسٹس شمس محمود مرزا، جسٹس شہباز علی رضوی ، جسٹس فیصل زمان اور جسٹس شاہد کریم بھی موجود تھے۔ شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہا کہ جنرل ٹریننگ پروگرام کے مختلف پہلو جائزہ طلب ہیں اور اس امر کی ضرورت ہے کہ قومی و بین الاقوامی یونیورسٹیوں اور اکیڈمیوں کے ساتھ معلومات کا تبادلہ کیاجائے اورٹریننگ پروگرام کا سہ ماہی جائزہ لیا جائے۔فاضل جسٹس نے کہا کہ جنرل ٹریننگ پروگرام 2015 میں مشاورت کے ساتھ مثبت تبدیلیاں کی جارہی ہیں اور جوڈیشل اکیڈمی اس کی بہتری کیلئے دن رات کوشاں ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ جدید طریقہ تعلیم مثلاََ آن لائن ٹریننگ، لیکچرز بذریعہ اسکائپ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کا استعمال تربیتی پروگرام کیلئے بہت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججزصاحبان پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کے تعاون سے اپنے متعلقہ اضلاع میں جوڈیشل افسران کیلئے تربیتی سیمینار اور دیگر پروگرام منعقد کروائیں اور اکیڈمی سے فیکلٹی ممبران وہاں کے دورے کریں۔ جسٹس منصور شاہ نے اکیڈمی مینجمنٹ کو ہدایت کی کہ جوڈیشل افسران کے بیرون ممالک ٹریننگ کیلئے بھی اسکالر شپس کا انتظام کیا جائے۔ اجلاس میں رجسٹرار حبیب اللہ عامر، سیشن جج لاہور طارق افتخار، ممبر وفاقی سروس ٹریبونل سید ناصر علی شاہ،اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل حنا حفیظ اللہ اسحاق، ایڈووکیٹ ظفر اقبال کلانوری، ایڈووکیٹ احمر بلال صوفی،ایڈووکیٹ محمد اکرم قریشی اورعلامہ اقبال میڈیکل کالج کے فرانزک ڈیپارٹمنٹ کے ہیڈ چودھری تجمل حسین سمیت دیگر ماہرین نے بھی شرکت کی۔

مزید : صفحہ آخر