سندھ کے وزیرستانوں کیخلاف فوری آپریشن کیا جائے،علامہ ناصر عباس جعفری

سندھ کے وزیرستانوں کیخلاف فوری آپریشن کیا جائے،علامہ ناصر عباس جعفری

لاہور( نمائندہ خصوصی) سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے مطالبہ کیا ہے کہ سندھ کے چھوٹے چھوٹے وزیرستاتوں کے خلاف فی الفور آپریشن شروع کیا جائے اگر آپریشن نہ ہوا تو پھر ہم لانگ مارچ کریں گے اور آئندہ جمعہ 13 فروری کو اندرون سندھ میں سانحہ کے خلاف پرامن ہڑتال ہو گی اور اگر اس کے باوجود ان دہشت گردوں کیخلاف کاروائی نہ ہوئی تو 15 فروری کو شکار پور سے کراچی لانگ مارچ کریں گے جو وزیر اعلیٰ ہاوُس پہنچنے پر دھرنا دینگے ۔ مجلس وحدت مسلمین کے میڈیا سیل سے جاری پریس ریلز کیمطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے نماز جمعہ کے بعد شکار پور گھنٹہ گھر چوک پر احتجاجی جلسے سے خطاب کے دوران کیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں کی شرکت کی ۔علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ دہشت گردوں سے خوف کھانے والے نہیں ہیں اگر ہم نے استقامت نہ دکھائی ہوتی تو قوم ان دہشت گردوں کے سامنے ہتھیار ڈال چکی ہوتی ہم ظلم کے سامنے جھکنے والے نہیں ہم نے ارض پاک کی حظافت کے لیے اپنے جوان قربان کیے ہیں حکومت افسوس کرنے کی بجائے اقدامات کرے ہمیں قاتلوں کے خلاف آپریشن چاہیے۔اگر ان دہشت گردوں کے خلاف کاروائی نہ کی تو کل کوئی اور شہر شکارپور بن جائے گا۔شہداء کے قاتلوں کو انجام تک پہنچائے بغیر چین سے نہیں بیٹھیں گے،قائم علی شاہ ریئسانی کی حکومت کے زوال سے سبق سیکھے ،ہمارا لانگ مارچ سب سے بڑا لانگ مارچ ہو گا حکومت کے دن گنے جا چکے ہیں وقت آگیا ہے کہ پاکستان دشمنوں کی حکومت کا خاتمہ کردیا جائے ہمارے سامنے دو راستے ہیں اسلحہ اٹھائیں یا عوامی طاقت سے ظالم کو جواب دیں ہم عوامی جدوجہد پر یقین رکھتے ہیں اور عوامی جدوجہد سے ہی دشمنوں کا مقابلہ کریں گے،پولیس دہشت گردوں کو کھلی چھٹی دے چکی ہے۔ علامہ راجہ ناصر کا کہنا تھا کہ عدلیہ کا کردار بھی دہشت گردوں سے متعلق شرمناک ہے سانحہ پشاور کے بعد سکولوں کو بند کرنا احمقانہ فعل تھا جن مدارس میں تکفیر کی تعلیم دی جاتی ہے وہاں کاروائی کی جائے

مزید : صفحہ آخر