جدیدٹیکنالوجی کا حیران کن نمونہ،دنیا کا پہلا ہوٹل جسے روبوٹ چلائیں گے

جدیدٹیکنالوجی کا حیران کن نمونہ،دنیا کا پہلا ہوٹل جسے روبوٹ چلائیں گے
جدیدٹیکنالوجی کا حیران کن نمونہ،دنیا کا پہلا ہوٹل جسے روبوٹ چلائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ٹوکیو (نیوز ڈیسک) روبوٹ ٹیکنالوجی کے میدان میں جاپان کا کوئی ثانی نہیں ہے اور اگرچہ اب تک تو یہ روبوٹ نمائشی مقاصد اور سائنسی تحقیق کے لئے ایجاد کئے جارہے تھے مگر اب جاپان میں ایک ایسا ہوٹل قائم کیا جارہا ہے جس میں 90فیصد سے زائد ملازمین روبوٹ ہوں گے۔

مزیدپڑھیں:دنیا کی تاریخ میں پہلی مرتبہ روبوٹ کا ٹکٹ خرید کر جہاز کا سفر

 ناگاساکی شہر کے ہوئیس ٹین باش تھیم پارک شہر میں ہینا ہوٹل قائم کیا جارہا ہے جس کا جاپانی زبان کے مطابق معنی عجیب و غریب ہوٹل ہے۔ اس ہوٹل میں 144 کمرے ہوں گے اور استقبالیہ سے لے کر کمروں کی صفائی ستھرائی اور سکیورٹی تک کے فرائض روبوٹ سرانجام دیں گے۔ اس منصوبے کے سربراہ ہیڈو سواڈا کا کہنا ہے کہ روبوٹ ہوٹل بنانے کے لئے ابتدائی تحقیقات اور تجربات مکمل کرلئے گئے ہیں اور انہوں نے اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ ہوٹل میں آنے والے مہمان روبوٹ ملازمین کی کارکردگی کی تعریف کئے بغیر نہیں رہ سکیں گے۔

 چونکہ ہوٹل میں قیام کے لئے درخواستیں ابھی سے موصول ہونا شروع ہوگئی ہیں اس لئے انتظامیہ نے فیصلہ کیا ہے کہ یہاں قیام کے لئے کسٹمرز کو بولی میں شامل ہوکر کمرہ حاصل کرنا پڑے گا۔ بولی کا آغاز تقریباً آٹھ ہزار روپے سے ہوگا اور اس کی زیادہ سے زیادہ حد تقریباً 30 لاکھ روپے ہوگی۔ سواڈا کا یہ بھی کہنا ہے کہ پہلے ہوٹل کی کامیابی کے بعد وہ روبوٹ ملازمین پر مشتمل ایک ہزار مزید ہوٹل قائم کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی