جنوبی پنجاب میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی، ریلیاں، جلسے اور مظاہرے ہوئے

جنوبی پنجاب میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی، ریلیاں، جلسے اور مظاہرے ہوئے

ملک بھر کی طرح جنوبی پنجاب میں بھی کشمیریوں کے ساتط اظہار یکجہتی کا دن جوش و خروش اور جذبے کے ساتھ منایا گیا بڑے چھوٹے شہروں میں کشمیر کی آزادی کے لئے ریلیاں نکالی گئیں اور مختلف جلسے جلوس اور سیمینارز منعقد کیے گئے جہاں مقررین نے کشمیر کی آزادی تک مکمل تعاون اور یکجہتی کا اعادہ کیا۔ ملتان شہر میں متعدد تقریبات منعقد ہوئیں جن میں مختلف سیاسی اور سماجی رہنماؤں نے یک زبان کشمیر کی آزادی کا مطالبہ دہرایا اور اس مقصد کے لئے آئندہ بھی کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اعادہ کیا اور مطالبہ کیا گیا کہ اقوام عالم خصوصاً اقوام متحدہ کشمیر کے متعلق جنرل اسمبلی میں پاس ہونے والی قرار دادوں پر فوری عمل کرائے اور کشمیریوں کو ان کے حقوق دئیے جائیں تاکہ وہ اپنی مرضی سے دنیا کی باقی قوموں کی طرح عزت و ابرو سے اپنا مقام بنا سکیں۔ مقررین نے بھارتی حکومت کی ہٹ دھرمی اور کشمیر میں مسلسل کرفیو اور لاکھوں کی تعداد میں فوج تعینات کرنے کی بھی سخت مذمت کی اور مطالبہ کیا کہ بھارتی حکومت فوری طور پر کشمیر سے اپنی فوجیں نکال لے اور اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی قرار دادوں پر عمل کو یقینی بنائیں اور کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق دیا جائے گذشتہ ستر سال سے بھارت اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہے اور کشمیر میں اپنے مظالم جاری رکھے ہوئے ہیں۔

سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی کی صاحبزادی کی رخصتی کی تقریب ایک بڑے سیاسی اجتماع میں تبدیل ہو گئی جس میں تمام مکتبہ فکر کی شخصیات سمیت حکمران جماعت کے وزراء، ارکان اسمبلی سمیت صدر مملکت ممنون حسین اپنی فیملی سمیت شریک ہوئے جبکہ گورنر رفیق رجوانہ اور کافی وزراء خواجہ سعد رفیق، احسن اقبال سمیت دوسرے وزیر بھی موجود تھے صدر مملکت کی شرکت کی وجہ سے سیکورٹی انتہائی سخت تھی جس کی وجہ سے کچھ لوگ شرکت سے بھی محروم رہے تاہم اس کے باوجود یہ ایک بڑا اجتماع تھا جس میں لاہور، کراچی، اسلام آباد اور پشاور سمیت مختلف شہروں سے مختلف شخصیات نے خصوصی طور پر شرکت کی، وزراء نے میڈیا سے بات چیت بھی کی خصوصاً وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے سابق صدر مملکت جنرل (ر) پرویز مشرف کو توہین عدالت کا سب سے بڑا مجرم قرار دیا اور توقع کی کہ اگر پرویز مشرف کو اڈیالہ جیل میں ڈالا جائے گا تو ہم سپریم کورٹ کو آزاد سمجھیں گے عام کارکنوں کو توہین عدالت میں بند کرنے سے عدالت کا رعب قائم نہیں ہوتا میاں نواز شریف کی نا اہلی کے فیصلے پر ن لیگ ہی نہیں بلکہ دنیا بھر نے تحفظات کا اظہار کیا اور اگر تحفظات کا اظہار توہین عدالت ہے تو پھر جی ٹی روڈ پر آنے والے تمام لوگ توہین عدالت کے مرتکب ہوئے تاہم وفاقی وزیر داخلہ نے عوام میں انصاف کے حصول کے اداروں کے احترام کو قائم رکھنے کے لئے کہا انہوں نے مزید کہا کہ مسلم لیگ ن نے ملک کو ترقی کی راہ پر لانے کے لئے معیشت، توانائی بحران کے خاتمے اور دہشت گردی کے خاتمے کے لئے خاطر خواہ اقدامات کئے سکھر، ملتان موٹروے 400 کلو میٹر طویل ہے جس پر 300 ارب روپے لاگت آئے گی ن لیگ نے 1600 کلو میٹر موٹر وے تعمیر کئے جو ایک تاریخی اعزاز کی بات ہے دریں اثناء وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے اپنی منطق کو پھر دہرایا کہ سیاست اور سیاستدانوں کو صرف عوام ہی نا اہل کر سکتے ہیں عدالتی فیصلوں سے سیاست کو دبایا نہیں جا سکتا سیاسی لڑائی عدالت میں نہیں جانی چاہیے اگر ہمارے یہی رویے رہے تو آئندہ عام انتخابات کے بعد بھی ملک مستحکم نہیں ہو گا ریاستی اداروں کو بھی سوچنا ہو گا کہ ملک پارلیمنٹ نے چلانا ہے اداروں کے درمیان فاصلوں سے ریاست کا نقصان ہو گا انہوں نے یہ دعویٰ بھی کیا دن رات کی محنت سے ریلوے کے خسارے کو کم کیا ہے اسی پالیسی کا تسلسل جاری جا رہا تو آئندہ تین سالوں میں ریلوے اپنے پاؤں پر کھڑا ہو گا گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی اخلاقی و سفارتی حمایت جاری رہے گی پاکستان عالمی سطح پر کشمیر کے مسئلہ کو اجاگر کرنے کا کوئی موقعہ ضائع نہیں کرے گا۔

دفاع کونسل کے زیر اہتمام یکجہتی کشمیر کانفرنس سے سیاسی ،مذہبی وکشمیری جماعتوں کے قائد ین نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیریوں نے پاکستان کے جھنڈے اٹھا کر کشمیر کو پاکستان بنا کر دکھا دیا ،پاکستان نے کشمیر کیلئے کچھ نہیں کیا۔پاکستان کشمیر کو قومی مسئلہ قرار دے اور آزادی کیلئے موثر اقدامات کرے ۔کشمیر کی آزادی سے پاکستان اس خطے میں سب سے بڑی قوت بن کر ابھرے گا ۔ان خیالات کا اظہار عید گاہ چوک ملتان میں دفاع پاکستان کونسل کے زیر اہتمام یکجہتی کشمیر کانفرنس سے پروفیسر حافظ محمد سعید ،سیدہ آسیہ اندرابی ،جمشید احمد دستی ،ڈاکٹر وسیم اختر ،سیف اللہ خالد ،رانا عبدالجبار ، محمد یعقوب شیخ،محمد ایوب مغل ،مولانا عبد الرحمان شاہین ، ڈاکٹر جاوید صدیقی ،میاں عبدالمجید ،قاری عبدالغنی ،ثاقب جمیل ،اجمل گورایہ ،نصر جاوید ،حافظ عبدالغفار ،سیداطہر شاہ بخاری ،عظیم الحق پیرزادہ ایڈوکیٹ ،عزیز الرحمان ،ملک سلطان محمود ،میاں سہیل نے خطاب کرتے ہوئے کیا۔کانفرنس میں تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد نے شرکت کی ۔پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا کہ حقیقت کی بنیاد پر کہنا چاہتا ہوں کہ کشمیر کے مسئلہ کے حل میں سب سے بڑی رکاوٹ اسلام آباد کی حکومت ہے ۔کشمیر یوں نے حق اداکردیا ۔وزیراعظم اقوام متحدہ کے مرکزی دفتر نیویارک کے باہر کابینہ کے ہمراہ دھرنا دیں اور اعلان کریں کہ جب تک اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل نہیں گا تب تک نہیں اٹھوں گا۔

دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندابی نے مقبوضہ کشمیر سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے کہا کے جب تک پاکستان سے ابن قاسم نہیں آئیں گے ہم ہندوستان سے لڑتے رہیں گے ۔آج ہم ایک بار پھر پانچ فروری کویکجہتی کشمیر منارہے ہیں ۔اس ایک سال میں کشمیر کو آزاد کروانے کے لئے ہم نے کیا کردار ادا کیا ،پچھلے ستر برسوں سے یہ دور خطرناک دور ہے ۔آج ہم مشکل ترین دور میں ہیں ۔

عوامی راج پارٹی کے سربراہ جمشید احمد دستی نے کہا کہ پاکستان کی پارلیمنٹ اندھیرے میں ڈوبی ہوئی ہے ۔جماعت اسلامی کے رہنما سید وسیم اختر نے کہا کہ کشمیر کی آزادی کاسورج مستقبل قریب میں طلوع ہوگا۔

میونسپل کارپوریشن ملتان کا اجلاس 3 مختلف گروپوں کی طرف سے ہلڑ بازی، مکے دھکے، گالم گلوچ اور جوتے چلنے کے باعث انتہائی بد نظمی اور طوفان بدتمیزی کا شکار ہو کر باضابطہ کارروائی کے بغیر ہی ختم ہو گیا گذشتہ سال اکتوبر کے بعد پہلی بار ہونے والے اجلاس میں ایک گروپ نے اجلاس کی صدارت کرنے والے کنوینئر سعید انصاری کی کرسی ہی الٹا دی اور انہیں دھکے دے کر کرسی سے ہٹا کر خود کرسی پر بیٹھ کر ڈھٹائی کا مظاہرہ کرتے رہے اجلاس میں ہلڑ بازی اور ہنگامہ آرائی ممبر رانا سجاد نے شروع کی جو بعد میں مچھلی بازار کے ماحول سے بھی بد تر حالات سے دو چار ہو گئی میونسپل کارپوریشن ملتان کے میئر نوید الحق ارائیں کو میئر شپ سے ہٹانے کی منصوبہ بندی کرنے اور مختلف منتیں ماننے والے ہاؤس کے اجلاس میں جاتے ہی 3 گروپوں میں تقسیم ہو کر ’’گو نواز گو‘‘ ’’گو عمران گو‘‘ ’’نواز شریف زندہ بار‘‘ ’’عمران خان زندہ باد‘‘ عمران خان مردہ باد اور ’’نواز شریف مردہ باد‘‘ کے نعرے لگاتے لگاتے ایک دوسرے پر جوتوں کے ساتھ حملہ آور ہوئے اجلاس میں ہلڑ بازی نے ثابت کیا کہ ملتان میں مسلم لیگ (ن) آپس کے اختلافات اور مفادات کی وجہ سے تقسیم ہو کر رہ گئی ہے ایک جماعت کے ممبران پہلی بار اجلاس میں آپس میں گتھم گتھا رہے۔

میونسپل کارپوریشن ملتان پاکستان تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے چیئرمین او ممبران نے کہا ہے کہ کارپوریشن کے ترقیاتی فنڈزلیگی ایم پی ایز کو دینے کے بجائے تمام ممبران میں برابری کی بنیاد پرتقسیم کیے جائیں ۔میونسپل کارپوریشن ملتان کو غیر متعلقہ اور کرپٹ مافیا سے واگزارکرایا جائے۔ جنرل بس سٹینڈ، سلاٹر ہاؤس او پارکنگ کے تمام ٹھیکوں کو فوری طور پر منسوخ کرکے پہلے سال کا غیر جانبدار انہ آڈٹ کرایا جائے ۔

ملتان میٹرو بس پروجیکٹ سیکنڈل میں بڑے نام سامنے آنا شروع ہو گئے ،35ارب روپے مالیت کے پروجیکٹ میں کرپشن کی تحقیقات کیلئے چےئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ عرفان الہی پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارتی کے منیجنگ ڈائریکٹر سبطین فضل ہاشمی ،جنرل منیجر پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی عزیز شاہ پروجیکٹ ڈائریکٹر صابر خان سدوزئی ،کنسلٹنسی فرم عثمانی پرائیویٹ لمٹیڈ کے جنرل منیجر فرحان حیدر ،سابق کمشنر ملتان و ڈی جی ایم ڈی اے کیپٹن (ر)اسد اللہ خان کو طلب کرلیا ۔انکوائری آفیسر نے ممبر انفراسٹریکچر ڈاکٹر عابد بودلہ ،چیف ٹیکنیکل خالد جاوید ،ایڈیشنل سیکرٹری فنانس عاشق حسین اولکھ ،ایڈیشنل سیکرٹری ٹیکنیکل ہاؤسنگ اربن ڈویلپمنٹ اور پبلک ہیلتھ انجینئرنگ شاہد لطیف ،ممبر سروسز پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈاکٹر نوید احمد ،ڈائریکٹر جنرل ایم اینڈ ای ڈاکٹر ساجد مبین ،اسسٹنٹ چیف ٹیکنیکل محمد عمران اور سوشل انفراسٹریکچر کی ڈاکٹر بشریٰ امان کوطلب کرلیا۔

مزید : ایڈیشن 1