اطالوی جرائم پیشہ مافیا کاداعش اور بوکو حرام سے بھی تعلق ہونے کا انکشاف

اطالوی جرائم پیشہ مافیا کاداعش اور بوکو حرام سے بھی تعلق ہونے کا انکشاف

روم(این این آئی)اٹلی کی پولیس نے انکشاف کیا ہے کہ صوبہ کالا بریا میں منشیات کی اسمگلنگ میں ملوث ندراگھیٹانامی مافیا کا شدت پسند گروپوں داعش اور بوکو حرام کے ساتھ بھی تعلق ہے۔ یہ مافیا ان تنظیموں کو ’ٹراماڈول‘ نامی منشیات کی گولیاں مہیا کرتا رہا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق انتہا پسند تنظیمیں اٹلی کے مذکورہ جرائم پیشہ مافیا سے نشہ آور گولیاں خرید کرتی رہی ہیں۔اطالوی پولیس نے پچھلے سال ٹراماڈول نامی منشیات کی 10 کروڑ گولیاں ضبط کی تھیں،یہ گولیاں لیبیا میں موجود داعش کے جنگجوؤں تک پہنچائی جانا تھیں، اطالوی گروپ مصر، شام کے جنگجو اورافریقی ملک نائیجیریا میں سرگرم بوکو حرام کو بھی ٹراماڈول فروخت کرتا رہا ہے۔اٹلی میں انسداد مافیا کے پراسیکیوٹر جنرل گائیٹانو باشی کے مطابق پولیس کا کہنا تھاکہ کالا بریا شہر میں سرگرم جرائم پیشہ مافیا اور شدت پسند گروپوں کے درمیان روابط موجود ہیں۔ پولیس نے ایک سال قبل ٹراماڈول گولیوں سے بھرا ایک ٹرک قبضے میں لیا تھا۔ یہ اپنی نوعیت کا تیسرا ٹرک تھا جسے شدت پسندگروپوں کو فروخت کیا جانا تھا۔ پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ یہ منشیات جنوبی بندرگاہ جیویا ٹاورو سے سمندر کے راستے دوسرے ملکوں تک پہنچائی جانی تھیں۔ منشیات اور دیگر غیرقانونی آبی ٹریفک کی وجہ سے اس بندرگاہ کو ’مافیا گیٹ‘ کہاجاتا ہے۔

گذشتہ برس شدت پسندوں کو فروخت کے لیے بھجوائی جانے والی ٹراماڈول کی جو گولیاں پکڑی گئیں ان کی مالیت ایک ملین ڈالر سے زیادہ بتائی جاتی ہے۔اخباری رپورٹس کے مطابق بیشتر منشیات پائن اپیل، فریز شدہ مچھلیوں، دودھ اور ناریل کے ٹرکوں پر لاد کر بھیجی جاتی ہیں۔

مزید : عالمی منظر