مہمند ایجنسی میں کیمور پہاڑ ہماری مشترجکہ ملکیت ہے ،قبائلی ملک

مہمند ایجنسی میں کیمور پہاڑ ہماری مشترجکہ ملکیت ہے ،قبائلی ملک

مہمند ایجنسی (نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی، کیمور پہاڑ ہمارا مشترکہ ملکیت ہے۔ قوم کی رضامندی کے بغیر مخصوص لوگوں کے ایماء پر لیز ہر گز قبول نہیں کرینگے۔ باجوڑ کے ٹھیکدار سراج خان اور عمر سید قوم کو آپس میں لڑا رہے ہیں۔ پولیٹیکل حکام سے پر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ جعلی طریقہ پر لیز فوری طور منسوخ کیا جائے۔ خون خرابے کی ذمہ داری پولیٹیکل حکام اور مخصوص لوگوں پر ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار حاجی گلزر، محمد شفیع، ملک انمر خان، ملک گل زرین، ملک دپورخان ، عمر دین، حاجی یعقوب خان، شاہ ولی، نورا جان سمیت درجنوں عوام نے مہمند پریس کلب میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ تحصیل امبار کے مشہور پہاڑ کیمور ہمارے اتمان خیل کے دو اقوام مامد خیل اور عمر خیل کا مشترکہ ملکیت ہے۔ مگر اب مخصوص لوگوں کے ایماء پر باجوڑ کے ٹھیکدار سراج اور عمر سید لیز حاصل کرنے کی کوشش کر تے ہیں۔ ہم نے بحیثیت قوم داراز ناوہ سے لیکر پیرانو کلے حاد گل نامی شخص کے گھر کے اوپر تک کے حدود میں سفید ماربل و نیپرائیٹ کا لیز حاجی گل زرین کو دی گئی ہے۔ ہم نے بحیثیت قوم پولیٹیکل حکام اور سیکورٹی فورسز کو باقاعدہ تحریری طور پر آگاہ کئے ہیں۔ مگر اس کے باؤجود بھی مخصوص لوگ ہمارے غریب، بیواؤں اور عام لوگوں کا حق مار رہے ہیں۔ جس کیلئے انہوں نے سادہ لوح عوام کے جعلی دستخطیں کر کے ان پہاڑ ی کا لیز حاصل کرنا چاہتا ہے۔ قبائلی رسم و رواج کے تحت ہر قسم جرگے کو بھی تیار ہے مگر باؤجود اس کے ہمارے ساتھ ظلم کیا جا رہا ہے اور انہیں لیز دینے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ پولیٹیکل حکام کو چاہئے کہ وہ جلسہ عام کر کے عام لوگوں کی مشاورت کے بعد لیز جاری کیا جائے۔ تاکہ سب مقامی لوگوں کی رائے لی جائے اور انصاف پر مبنی فیصلہ کیا جائے۔ اگران مذکورہ لوگوں کی روک تھام نہ کی گئی تو قومی تنازعے میں خون خرابہ ہو سکتا ہے جس کی تمام ذمہ داری متعلقہ حکام اور مخصوص لوگوں پر ہوگی۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ ہمیں انصاف فراہم کر کے ہمارے مطالبات پر فوری طور غور کریں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر