مشال قتل کیس کا مرکزی ملزم عارف خان اس وقت کہاں ہے؟ نجی ٹی وی نے ایسے دعویٰ کر دیا کہ کے پی کے پولیس شرم سے پانی پانی ہو جائے گی

مشال قتل کیس کا مرکزی ملزم عارف خان اس وقت کہاں ہے؟ نجی ٹی وی نے ایسے دعویٰ کر ...
مشال قتل کیس کا مرکزی ملزم عارف خان اس وقت کہاں ہے؟ نجی ٹی وی نے ایسے دعویٰ کر دیا کہ کے پی کے پولیس شرم سے پانی پانی ہو جائے گی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

مردان (ڈیلی پاکستان آن لائن) انسداد دہشت گردی عدالت نے مشال خان قتل کیس میں ایک مجرم کو سزائے موت اور 5 کو عمر قید کی سزا سناتے ہوئے 26 افراد کو بری تو کر دیا ہے لیکن اس کیس کا مرکزی ملزم تاحال فرار ہے جس کا تعلق صوبے میں حکمران جماعت سے بتایا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”یہ شادی سے پہلے بڑی خوبصورت لگتی تھی لیکن سہاگ رات کے اگلے دن۔۔۔“ شوہر نے سہاگ رات کے اگلے دن بیوی کو میک کے بغیر دیکھا تو چیخیں نکل گئیں، مقدمہ ہی کر ڈالا، تصاویر دیکھ کر آپ کو بھی اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آئے گا

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق ملزم کو پکڑنا تو دور کی بات خیبرپختونخواہ پولیس کو ابھی تک یہ ہی معلوم نہیں کہ ملزم آخر ہے کہاں؟ وہ پاکستان میں ہی کہیں چھپا ہوا ہے یا پھر بیرون ملک فرار ہو چکا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اگر وہ بیرون ملک ہو تو انٹرپول سے رابطہ کیا جائے اور اگر پاکستان میں کہیں چھپا ہوا ہے تو پھر دوسرے صوبے کی پولیس سے رابطہ کیا جا سکتا ہے یا پھر اگر وہ فاٹا میں ہے تو وہاں بات کی جا سکتی ہے لیکن یہ سب کچھ اس وقت ہو گا جب پولیس کو اس کی کوئی خبر ملے گی۔

خیبرپختونخواہ پولیس ابھی تک یہ بھی معلوم نہیں کر سکی کہ آخر ملزم کہاں گیا ہے جس کے باعث خیبرپختونخواہ پولیس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان کھڑا ہو گیا ہے۔ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ اس مقدمے میں پولیس نے تفتیش ٹھیک طرح سے نہیں کی کیونکہ ان کے پاس ویڈیو ثبوت موجود تھے اور سب لوگوں کی شکلیں بھی نظر آ رہی تھیں لیکن اس کے باوجود عدالت میں ان لوگوں پر مقدمہ ثابت نہیں ہو سکا تو یہ پولیس کی ناقص کارکردگی ہے کیونکہ کیس ثابت کرنا پولیس کا کام ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”آپ مجھ سے شادی کر لو“ پاکستانی نوجوان کی اس خاتون پائلٹ کو پیشکش، آگے سے جواب کیا ملا؟ جان کر آپ ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو جائیں گے

اب ایسا کیوں اور کیسے ہوا، یہ سب ناقص کارکردگی کے باعث ہے یا کسی کے دباﺅ کا نتیجہ تھا؟ یہ سب ہائیکورٹ میں کھل کر سامنے آئے گا۔ دوسری جانب پولیس کیلئے بھی یہ کوئی اچھی بات نہیں کہ بہت سے لوگوں کو عدالت سے سزا ہی نہیں ملی اور پولیس بھی اس پر خوش نہیں ہو گی۔

مزید : قومی /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور /مردان