20 سال سے مسافر جہاز اُڑاتا پائلٹ، لیکن پھر ایک دن اس کا ٹیسٹ کیا گیا تو ایسا انکشاف کہ کھلبلی مچ گئی، پتہ چلا کہ وہ تو 20 برس سے مسلسل۔۔۔

20 سال سے مسافر جہاز اُڑاتا پائلٹ، لیکن پھر ایک دن اس کا ٹیسٹ کیا گیا تو ایسا ...
20 سال سے مسافر جہاز اُڑاتا پائلٹ، لیکن پھر ایک دن اس کا ٹیسٹ کیا گیا تو ایسا انکشاف کہ کھلبلی مچ گئی، پتہ چلا کہ وہ تو 20 برس سے مسلسل۔۔۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

واشنگٹن(نیوز ڈیسک) شراب پی کر انسان نشے کے ہاتھوں ایسا مغلوب ہو جاتا ہے کہ اس کے لئے سیدھی طرح چلنا ممکن نہیں رہتا لیکن امریکا میں ایک پائلٹ نے غیر ذمہ داری کی انتہاءکر دی کہ وہ شراب پی کر مسافر ہوائی جہاز اڑاتا رہا، اور وہ بھی مسلسل 20 سال تک۔

دی مرر کے مطابق ڈیوڈ ہینس آرنسٹن نامی پائلٹ 20 سال سے نشہ کرکے جہاز اُڑا رہا تھا لیکن حیرت کی بات ہے کہ اس تمام عرصے کے دوران ایک بار بھی اسے پکڑا نہیں گیا۔ یہ جون 2014ءکا واقعہ ہے کہ جب پہلی بار اس کے خون میں الکوحل کی مقدار قانونی حد سے زائد ہونے پر اسے جہاز اُڑانے سے روکا گیا۔ وہ الاسکا ائیر لائن کی پرواز کو سان ڈیاگو سے پورٹ لینڈ لیجانے کی تیاری کررہا تھا کہ جب اس کا ٹیسٹ کیا گیا اور پتہ چلا کہ اس کے خون میں الکوحل کی مقدار 0.142 فیصد تھی جبکہ قانونی حد 0.04 فیصد ہے۔ اسے ناصرف جہاز اُڑانے سے روک دیا گیا بلکہ اس کے خلاف تحقیقات کا حکم بھی دیا گیا۔ تفتیش کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ وہ گزشتہ 20 سال سے شراب نوشی کی لت میں مبتلا تھا اور اکثر شراب پی کر جہاز اُڑانے چلا جاتا تھا۔

لاس اینجلس ڈسٹرکٹ اٹارنی نکولا ہینا نے اس واقعے پر اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ”اس پائلٹ کی شراب نوشی کی لت کسی بھی خوفناک حادثے کا سبب بن سکتی تھی۔ یہ شخص 20 سال تک ایک ائیرلائن کے لئے کام کرتا رہا اور ہمیں اب پتہ چلا ہے کہ وہ اکثر شراب نوشی کرکے جہاز اُڑاتا تھا۔ یہ خوش قسمتی کی بات ہے کہ اس کی شراب نوشی کسی حادثے کا سبب نہیں بنی لیکن یہ عین ممکن تھا اورکسی بھی وقت ہوسکتا تھا۔ ایسا کم ہی دیکھنے میں آیا ہے کہ کسی شخص نے اس طرح سینکڑوں افرا دکی جان کو بار بار خطرے میں ڈالنے کی کوشش کی ہو۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس