موبائل فونزکے سگنلز کی عدم دستیابی نئے ٹاور کیلئے جگہ تلاش کرکے 13 فروری کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم

موبائل فونزکے سگنلز کی عدم دستیابی نئے ٹاور کیلئے جگہ تلاش کرکے 13 فروری کو ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے عدالت عالیہ میں موبائل فونزکے سگنلز کی عدم دستیابی کے معاملہ پر درخواست پرنئے ٹاور کے لئے جگہ تلاش کرکے 13 فروری کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مامون رشید شیخ نے کیس کی سماعت کی،عدالت کے روبرو موبائل کمپنیز کے وکیل نے آگاہ کیا کہ تجرباتی طور پر تمام ممکنہ آپشنز پر کام کیا گیا ہے ایمپلی فائر اور سول ورک کے لیے مناسب وقت دیا جائے، وکیل نے مزید آگاہ کیا کہ ایک ٹاور کو استعمال کرکے تمام کمپنیاں سروس فراہم کرسکتی ہیں،جس ہر عدالت نے استفسار کیا کہ تجاویز آپ نے دیدیں ان پر عملدرآمد میں کتنا وقت لگ سکتا ہے،کیا تمام موبائل کمپنیاں فور جی پر منتقل ہوچکی ہیں جس پر درخواست گزار وکیل نے آگاہ کیا کہ پی ٹی اے کی رپورٹ کے مطابق ابھی تک کمپنیاں پرانے اور کم صلاحیت والے آلات استعمال کررہی ہیں، پی ٹی اے رسمی کارروائی کرتا ہے آلات چیک نہیں کرتا ہے، جس پر عدالت نے آگاہ کیا کہ پی ٹی اے کی جانب سے جمع کروائی گی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایمپلی فائر آف ہونے سے سگنلز کوالٹی بہتر ہوگئی،ایمپلی فائر کا استعمال غیر قانونی ہے اگر کارروائی کا حکم دوں تو وکلاء اعتراض نہ کریں گے موبائل کمپنیاں ایک نیا ٹاور لگانے پر تیار ہیں،جس پر درخواست گزار وکیل نے موقف اختیار کیا کہ موبائل کمپنیاں جتنے پیسے لے رہی ہیں اس جیسی سروس فراہم نہیں کر رہی ہیں موبائل کمپنیاں سروس چارجز وصول کرکے سروس فراہم نہیں کرتی ہیں موبائل کمپنیاں ایک مافیا کے طور پر کام کر رہے ہے ہائیکورٹ کیاردگردصرف تین موبائل ٹاورزہیں جوناکافی ہیں اور کسی بھی موبائل کمپنی کے سگنلز درست طریقے سے کام نہیں کررہے ہیں،موبائل سگنلز نہ ہونے سے وکلاء اور سائلین کو مشکلات کاسامنا ہے، عدالت پی ٹی اے کو ہائیکورٹ میں سگنل بہتر بنانے کے لیے اقدامات کرنے کا حکم دے،عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد نئے ٹاور کیلئے جگہ تلاش کرکے 13 فروری کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دے دیا۔
موبائل ٹاور

مزید :

صفحہ آخر -