کرک،پبلک ہیلتھ کے سینکڑوں ملازمین کا احتجاجی دھرنا

کرک،پبلک ہیلتھ کے سینکڑوں ملازمین کا احتجاجی دھرنا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
کرک (نمائندہ خصوصی)تنخواہوں کی بندش کیخلاف پبلک ہیلتھ کے سینکڑوں ملازمین کا ایکسئین آفس کے سامنے دھرنا،ایکسئین نے ڈیوٹی میں کوتاہی برتنے اورآبنوشی منصوبوں کو آبپاشی کیلئے استعمال کرنیوالے ملازمین کو برطرف کرنے کی دھمکی دیدی۔جمعرات کے روز پبلک ہیلتھ کے سینکڑوں ٹیوب ویل اپریٹرز،وال مین نے تنخواہوں کی بندش کیخلاف ڈویژنل صدر عبدالاکبر خان اور جنرل سیکرٹری اودین الرحمن سمیت تینوں تحصیلوں کے صدور،جنرل سیکرٹریز کی قیادت میں ایکسئین پبلک ہیلتھ کے دفتر میں دھرنا دیااورنعرہ بازی کیں بعدازاں پبلک ہیلتھ انجینئرز ورکرز یونین کے عہدیداروں نے ایس ڈی اوانجینئر حفیظ کی موجودگی میں ایکسئین پبلک ہیلتھ رفیع اللہ سے ان کے دفتر میں ملاقات کی اور صرف الزامات کی بنیاد پر ملازمین کی تنخواہوں کی بندش کو ملازمین کیساتھ ناانصافی قرار دیتے ہوئے الزامات کی تحقیقات کرنے اور فوری تنخواہوں کی ادائیگی کا مطالبہ کیا اور ایس ڈی او،سب انجینئرز کی ملازمین کیساتھ غیر مناسب رویے کی مذمت کرتے ہوئے ان کے رویے درست کرنے ملازمین سے سروس بک کے نام پر پیسے لینے والے کلرک کیخلاف کارروائی،نئی بھرتیوں میں اراضی مالکان اورملازمین کے بچوں کو سو فیصد کوٹہ دینے اور واٹر چارجز کی وصولی کیلئے پرنٹ بلز،جمع کرنے کی رسیدیں دینے کا مطالبہ کیا ایکسئین پبلک ہیلتھ نے یونین کے تمام جائز مطالبات منظور کئے البتہ سب پر واضح کیا کہ معاملہ سٹینڈنگ کمیٹی کے پاس ہے اور الزامات کی چھان بین بھی ہورہی ہے اور جس اپریٹر پر بھی آبنوشی منصوبے کو آبپاشی کیلئے استعمال کرنے کا الزام درست ثابت ہوا ملازمت سے برطرف کرنے میں دیر نہیں لگانگا اور ڈیوٹی میں کوتاہی بھی ہرگز برداشت نہیں کرونگاجس پر ملازمین پرامن طور پر منتشر ہوئے