صرف اظہاریکجہتی سے مسئلہ کشمیر حل نہیں  ہوگا،ڈاکٹر جمیل احمد خان

صرف اظہاریکجہتی سے مسئلہ کشمیر حل نہیں  ہوگا،ڈاکٹر جمیل احمد خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی (اسٹاف رپورٹر) سابق سفیر، سینئر تجزیہ کار اور ماہر بین الاقوامی امورڈاکٹر جمیل احمد خان نے کہا ہے کہ امریکا، اسرائیل اور بھارت ایک پیج پر ہیں، اسرائیل جو فلسطین میں  کررہا ہے بھارت وہی کشمیر یوں  کیساتھ کرتانظر آرہاہے، کشمیریوں  کے ساتھ صرف اظہاریکجہتی سے مسئلہ حل نہیں  ہوگا، ہمیں  دنیا کے ہر فورم پر کشمیر کا مسئلے کو اجاگر کرنے کی ضرورت ہے، سیاسی سطح پر اقدامات کے فقدان کی وجہ سے ہمارے پاس کشمیر کے حوالے سے چیلنجز کا انبار ہے، دنیا بھر میں  موجود پاکستانی سفارتخانوں  میں  کشمیر کے حوالے سے سیمینارز کا انعقاد کرکے اقوام عالم کو کشمیر کے دیرینہ مسئلے اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کے حوالے سے شعور اجاگر کرنا ہوگا۔ یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں خیالات کا اظہارکرتے ہوئے سابق سفیر ڈاکٹر جمیل احمد خان کا کہنا تھا کہ دنیا میں  اسلامو فوبیا کے تدارک کیلئے مسلم امہ کو آگے بڑھ کراپنا کرداراداکرنا چاہیے، انہوں  نیکہا کہ کچھ بااثر مسلم ممالک پس پردہ بھارت اور اسرائیل کے ہمنوا ہیں جبکہ ملائیشیا، ترکی اور ایران کشمیر کے مسئلہ پر پاکستان کے موقف کے حامی ہیں  ۔ ملائیشیا نے کشمیر پر قبضے کا برملا اظہار کرتے ہوئے بھارت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے، اوآئی سی میں اثرورسوخ رکھنے والے خلیجی ممالک کی جانب سے کبھی واضح موقف سامنے نہیں  آیا۔اوآئی سی نے خود سربراہان کا اجلاس بلاسکی اور نہ ہی اقوام متحدہ میں  آوازاٹھاسکی،اس لیئے او آئی سی سے کشمیر کے حوالے سے کوئی اہم پیشرفت کی توقع نہیں  ہے۔ہمیں  کشمیر یوں  کے ساتھ یک جہتی کے ساتھ زمینی حقائق کو سامنے رکھتے ہوئے اقدامات کرنے کی بھی ضرورت ہے۔عرب لیگ اور اوآئی سی سمیت تمام مسلم ممالک کو ملکر ایک لائحہ عمل ترتیب دیں  تاکہ اقوام عالم کشمیر اور فلسطین کے مسئلہ کے حل کیلئے بھارت اور اسرائیل پر دباؤڈالیں۔