سینیٹ الیکشن پر حکومت گھبرا گئی:بلاول بھٹو،صدارتی آرڈیننس معاملے پر سپریم کورٹ جائینگے:فضل الرحمٰن،مریم نواز

سینیٹ الیکشن پر حکومت گھبرا گئی:بلاول بھٹو،صدارتی آرڈیننس معاملے پر سپریم ...

  

 اسلام آباد (این این آئی)اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے آرڈیننس کے ذریعے سینیٹ الیکشن شوآف ہینڈ سے کرانے کے اقدام کی شدید مخالفت اعلان کر دیا۔پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمن اور مسلم لیگ (ن) کی نائب صدرمریم نواز نے ملاقات کی ملاقات میں دونو رہنماؤں نے آرڈیننس کے ذریعے سینیٹ الیکشن شوآف ہینڈ سے کرانے کے اقدام کی شدید مخالفت کرنے کا فیصلہ کیا۔دونوں رہنماؤں نے اتفاق کیا کہ آئینی ترمیم کے بغیر سینیٹ الیکشن کا طریقہ کار تبدیل نہیں کیا جا سکتا۔ مریم نواز نے کہا کہ سینیٹ الیکشن میں پتا چل جائیگا کون کس کے ساتھ کھڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم نے تحریک عدم اعتماد کا آپشن مسترد نہیں کیا جبکہ پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ٓارڈیننس کے معاملے پر عدالت  جانا پڑا تو جائیں گے۔ لی ملاقات میں اپوزیشن کے لانگ مارچ کے طریقہ کار اور دورانیے پر گفتگو ہوئی، ملاقات میں طے پایا کہ لانگ مارچ سے متعلق تمام تجاویز کا اسٹیرنگ کمیٹی میں جائزہ لیکر حتمی فیصلہ کیا جائے گا، دونوں رہنماں کی ملاقات میں لانگ مارچ اسلام آباد پہنچنے پر پہلا پڑا  ؤفیض آباد پر ڈالنے کی تجویز سامنے آئی، ملاقات میں سینیٹ الیکشن میں مشترکہ امیدواروں کی کامیابی یقینی بنانے کی حکمت عملی پر بھی گفتگو ہوئی تحریک عدم اعتماد پہلے پنجاب سے لائی جائے یا بلوچستان سے، اس حوالے سے پیپلز پارٹی کی تجاویز پر بھی غور کیا گیا۔ دوسری طرف  پاکستان پیپلزپارٹی کے  چیئرمین   بلاول بھٹو زرداری نے کہا  ہے کہ حکومت پی ڈی ایم کے سینیٹ الیکشن لڑنے کے اعلان سے گھبرا گئی ہے،  اب اداروں کو متنازعہ بنا کر عمران خان کے لیے دھاندلی کرائی جارہی ہے،اب پی ٹی آئی کی ہر دھاندلی کرنے کی کوشش ناکام رہے گی، عمران خان پورے ملک کو بتا رہے ہیں انہیں اپنے نمبرز پر اعتماد اور بھروسہ نہیں یا، آئین میں ترمیم صرف پارلیمنٹ کرسکتی ہے  اسمبلی میں کسی کو اس معاملے پر بات کرنے نہیں دی گئی، سینئراراکین پرحملہ کیاگیا، سپریم کورٹ کو بھی متنازعہ بنانے کی کوشش کی گئی ہے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  انہوں نے کہا کہ حکومت آرڈیننس کے ذریعہ سینیٹ کے انتخابات اوپن بیلٹ کے ساتھ کرانا چاہتی ہے  مگر پی ڈی ایم اس کی پھرپور مخالفت کرے گی   انہوں نے کہا کہ آئین میں ترمیم صرف اور صرف پارلیمان کر سکتی ہے جبکہ یہ معاملہ ابھی کورٹ میں ہے اب کابینہ سے منظور  لے کر اس معاملے پر آرڈیننس جاری کیا گیا ہے جومعاملہ عدالت میں زیر سماعت ہے۔ چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ سینیٹ انتخابات کو متنازعہ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے اور عمران خان اپنے نمبرز پر اعتماد نہیں ہے اس لئے وہ کسی نہ کسی طریقے سے اپنے بندوں کو کنٹرول کرنے کیلئے یہ حربے استعمال کر رہے ہیں، حکومت کی جانب سے جو طریقہ کار منتخب کیا جا رہا ہے وہ غیر جمہوری ہے۔ بلاول زرداری نے کہا کہ احتجاج کرنا ہمارا جمہوری حق ہے اور جمہوری حق کو استعمال کرتے ہوئے لانگ مارچ کر رہے ہیں، جبکہ استعفوں کے معاملے سے پیچھے نہیں ہٹے ہیں۔

پی ڈی ایم

مزید :

صفحہ اول -