شہباز شریف لندن سے بھی منی لانڈرنگ کی مہر لگوائینگے:شہزاد اکبر

شہباز شریف لندن سے بھی منی لانڈرنگ کی مہر لگوائینگے:شہزاد اکبر

  

 اسلام آباد (این این آئی) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب و داخلہ شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ ڈیلی میل کیخلاف شہباز شریف کی جانب سے دائر ہتک عزت کا مقدمہ ابھی شروع ہوا ہے تو یہ جیت کیسے گئے،اب یہ لندن سے بھی منی لانڈرنگ کی مہر لگوائیں گے،سمجھ نہیں آتی مریم نواز،شہباز شریف کے خاندان کو ڈیلی میل پر اتنا غصہ کیوں ہے؟،شہباز شریف کو پھر چیلنج کرتا ہوں اگر آپ میں ہمت ہے تو لندن میں مجھ پر ہتک عزت کا مقدمہ دائر کریں، میں آپ کی خدمت میں حاضر ہو جاؤنگا،سیاسی سرپرستی کے حامل مافیا کیخلاف آپریشن میں 210 ارب روپے کی سرکاری زمین بازیاب کرائی گئی، گرفتار 36 لوگوں سے 24 ارب روپے بازیاب کرائے گئے ہیں۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے معاون خصوصی شہزاد اکبر نے کہا کہ شہباز شریف نے ڈیلی میل پر ہتک عزت کا مقدمہ کیا ہوا تھا جس کی لندن میں سماعت تھی۔انہوں نے کہا کہ شہباز شریف نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ ڈیلی میل، ڈیوڈ روز، شہزاد اکبر اور عمران خان پر مقدمہ کریں گے، 75فیصد وعدہ ٹھس ہو گیا اور انہوں نے صرف ڈیلی میل اور ڈیوڈ روز پر مقدمہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے ڈیلی میل کو نوٹس بھیجا کہ آپ معافی مانگیں ورنہ ہم آپ کو ہتک عزت کا نوٹس بھیجیں گے لیکن انہوں نے کہا کہ ہم اپنی خبر پر قائم ہیں، ہم معافی نہیں مانتے، کافی عرصہ گزرنے کے بعد انہوں نے عدالت میں مقدمہ دائر کردیا اور سب سے پہلے اس کی آن لائن سماعت کی گئی۔معاون خصوصی نے بتایا کہ اس سماعت میں ڈیلی میل کے وکلاء نے کہا کہ پہلے یہ واضح کردیا جائے کہ ہمیں کس چیز کا جواب دینا ہے اور کس چیز کا جواب نہیں دینا، اس سماعت میں اس بات کا فیصلہ ہونا تھا کہ جب کوئی عام قاری اس بات کو پڑھتا ہے تو اسے کیا سمجھ میں آتا ہے، وہ کیا تاثر لیتا ہے اور عام آدمی نے کیا تاثر لیا۔ انہوں نے کہا کہ جج نے کہا ہے کہ عام آدمی نے آرٹیکل پڑھ کر یہ تاثر لیا کہ شہباز شریف اور ان کا خاندان کرپٹ سرگرمیوں اور منی لانڈرنگ میں ملوث ہے اور دوسرا تاثر یہ دیا کہ شہباز شریف کے داماد علی عمران نے زلزلے زدگان کی امداد کیلئے آنے والے پیسوں میں مالی خوردبرد کی۔انہوں نے کہا کہ جج نے کہا کہ یہ آرٹیکل پڑھ کر یہ تاثر جاتا ہے کہ شہباز شریف اور ان کا خاندان منی لانڈرنگ میں ملوث ہے اور ان کے داماد نے رقم میں خوردبرد کی تو اگر ڈیلی میل اس خبر میں موجود مواد کو ثابت نہیں کر پاتا تو یہ ہتک عزت ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ٹرائل شروع ہونا ہے کہ لیکن یہ تاثر دیا گیا کہ جیسے شہباز شریف ڈیلی میل کے خلاف ہتک عزت کا کیس جیت گئے تو شہباز شریف اور ان کے چاہنے والوں کیلئے عرض ہے کہ یہ درست رپورٹنگ نہیں تھی، شہباز شریف کا کیس شروع ہوا ہے تو یہ جیت کیسے گئے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ مجھے سمجھ نہیں آتی کہ مریم نواز اور شہباز شریف کے خاندان کو ڈیلی میل پر اتنا غصہ کیوں ہے۔

شہزاد اکبر

مزید :

صفحہ اول -