فیصل آباد،6سال سے زیر التواء 6ہزار سے زائد پولیس انکوائریوں،اپیلوں پر فیصلے سنائے گئے

فیصل آباد،6سال سے زیر التواء 6ہزار سے زائد پولیس انکوائریوں،اپیلوں پر فیصلے ...

  

 فیصل آباد(جنرل رپورٹر) گذشتہ6سال سے فیصل آباد پولیس اہلکاروں کی زیر التواء محکمانہ انکوائریوں اور اپیلوں کا ایک بڑا حصہ2020کے دوران نمٹا دیا گیاسال2015سے اب تک مختلف سی پی اوز کے ادوار کے دوران محکمانہ سزائیں لینے والے پولیس افسران کی جانب سے کی گئی 6 ہزار 2 سو 18اپیلوں اور انکوائریوں پر فیصلے سنائے گئے جن میں 3ہزار 6 سو 55اپیلیں صرف گذشتہ ایک سال میں نمٹا دی گئیں جوکہ فیصلہ شدہ کیسز کا تقریباً 60فیصد بنتا ہے‘ موجودہ سی پی او محمد سہیل چوہدری کی جانب سے آئی جی پنجاب کو بھجوائی جانیوالی محکمانہ رپورٹ کے مطابق سی پی او آفس میں سال2015میں 282کیسز نمٹائے گئے جبکہ2016میں یہ تعداد بڑھ کر1370ہوگئی‘اسی طرح 2017 میں 570اپیلوں پر فیصلہ سنایا گیا جبکہ2018میں 292اور2019میں 112انکوائریاں اور اپیلیں نمٹا دی گئیں جبکہ بعدازاں ڈی آئی جی سہیل چوہدری کی بطور سی پی او فیصل آباد تعیناتی کے بعد یہ تعداد تیزی سے بڑھتے ہوئے3ہزار 6سو55تک جاپہنچی‘اس حوالہ سے سی پی او کا کہنا ہے کہ محکمانہ سزاو جزا پولیس کی کارکردگی میں اہم کردار ادا کرتی ہے اور فیصل آباد میں تعیناتی کے وقت انکاسب سے پہلا مقصدانکو کی گئی محکمانہ اپیلیں اور انکوائریاں نمٹانا ہے‘انکا یہ پالیسی پولیس فورس کیلئے حوصلہ افزا ہے جس سے پولیس کا مورال بلند ہوگا۔

کارکردگی رپورٹ

مزید :

علاقائی -