اوچشریف‘ جلالپور ایکسپریس منصوبہ نامکمل‘ پل پر گڑھے‘ حادثات میں اضافہ 

اوچشریف‘ جلالپور ایکسپریس منصوبہ نامکمل‘ پل پر گڑھے‘ حادثات میں اضافہ 

  

اوچشریف (نامہ نگار) پانچ ارب روپے کی خطیر رقم خرچ ہونے کے باوجود اوچ جلال پور پیروالہ ایکسپریس منصوبہ مکمل نہ ہو سکا، تفصیل کے مطابق سابقہ پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں اس وقت کے ایم این اے سردار عامر یار وارن کی سفارشات پر سابق وزیراعظم پاکستان سید یوسف رضا گیلانی نے تین ارب بیس کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے (بقیہ نمبر8صفحہ 6پر)

اوچ جلال پور پیروالہ ایکسپریس منصوبے کا دریائے ستلج کے مقام پتن ایمن والا کے مقام پر موسی پاک برج اور ساتھ ہی تیس کلومیٹر نیشنل ہائی وے تعمیر کرنے کا سنگ بنیاد رکھا، تعمیراتی کام کی تکمیل دسمبر 2011 میں ہونا تھی، لیکن روایتی تاخیری بہانوں کے باعث کام مقررہ مدت میں مکمل نہیں ہو سکا، اور پھر ٹھیکیدار نے سڑک کی تعمیر کا کام 2013 کے الیکشن میں مسلم لیگ ن کی حکومت آنے پر مکمل طور پر روک دیا، مقامی آبادی کے لوگ کے سخت احتجاج پر اس منصوبے پر مسلم لیگ ن  کی حکومت کے آخری دنوں دوبارہ کام شروع ہوا،اور  میٹیریل مہنگا ہونے کے نام پر مزید ایک ارب سینتالیس کروڑ روپے کے فنڈز شامل کئے گئے جس سے اس منصوبے کی مالیت بڑھ کر چار ارب ستاسی کروڑ روپے ہو گئی، لیکن کام کی تکمیل سے قبل ہی ن لیگ کے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے خیر پور ڈاہا کے مقام پر ایک مخصوص پروگرام میں اس منصوبے کی تکمیل کا دعویٰ کرتے ہوئے باقاعدہ طور پر اوچ جلال پور پیروالہ ایکسپریس وے کا افتتاح بھی کر دیا، لیکن ٹھیکیدار کی مبینہ غفلت سے سے یہ منصوبہ ابھی تک پایہ تکمیل تک نہیں پہنچ سکا، اس ایکسپریس وے کو قومی شاہراہ سے ملانے کیلئے سوئی گیس کوٹنگ پلانٹ بھٹہ ککس موڑ کینزدیک نہر عباسیہ پر پل کی تعمیر مکمل ہونے کے باوجود سڑک کی تعمیر کا کام تاخیر کا شکار ہے جبکہ قومی شاہراہ پر واقع ہیڈپنجند پل کی تعمیر کے باعث بھاری ٹریفک کا رخ بھی جلال پور پیروالہ روڈ کی طرف ہو گیا ہے، بھٹہ ککس عباسیہ کینال پل پر راستہ خراب ہونے کے باعث بھاری گاڑیاں پھنس جاتی ہیں، جس کی وجہ سے تمام ہیوی ٹریفک اوچشریف شہر کے اندر سے گزرنے کے باعث جان لیوا حادثات کی شرح میں خطرناک اضافہ ہو گیا ہے، شہریوں محمد عامر غنی ایڈووکیٹ، مولوی جاوید اقبال، مشتاق خان ایڈووکیٹ، شفیق الرحمن، محمد ظفر اللہ، حاجی عبدالجبار، شاہین رسول، حاجی ریاض احمد، نصیر احمد، اظہرعلی،ملک محمد اسلم ہمشیرا،ملک عباس، و دیگر نے بتایا کہ مبینہ ناقص میٹیریل استعمال کرنے کی وجہ سے نو تعمیر شدہ سڑک مکمل ہونے سے پہلے ہی جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے، جسے دوبارہ مرمت کیا گیا ہے جبکہ موضع مامون آباد میں تعمیر شدہ پل میں گڑھے پڑ گئے ہیں جن سے آئے روز حادثات میں اضافہ ہو گیا ہے، لیکن ٹھیکیدار کام مکمل کرنے کی بجائے تاخیری حربے استعمال کر رہا ہے انہوں نے ارباب اختیار سے اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔

حادثات / اضافہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -