یوٹرن پوری دنیا میں وزیراعظم کی پہچان بن گیا ، تحریک انصاف نے ’ نیا پاکستان ‘ بناتے بناتے’پرانا پاکستان‘ گرا دیا 

 یوٹرن پوری دنیا میں وزیراعظم کی پہچان بن گیا ، تحریک انصاف نے ’ نیا پاکستان ...
 یوٹرن پوری دنیا میں وزیراعظم کی پہچان بن گیا ، تحریک انصاف نے ’ نیا پاکستان ‘ بناتے بناتے’پرانا پاکستان‘ گرا دیا 

  

مردان (ڈیلی پاکستان آن لائن) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ یوٹرن پوری دنیا میں وزیراعظم کی پہچان بن گیا ہے،بڑ ے عہدوں پر چھوٹے لوگ بیٹھے ہیں جنہوں نے پاکستان کاکباڑا کر دیا،تحریک انصاف( پی ٹی آئی) کی حکومت دو ڈھائی برسوں میں ہر شعبہ میں خراب پرفارمنس دیکر اتنی بری طرح ایکسپوز ہوئی کہ اب وزیراعظم کے الفاظ ان کا ساتھ دینا چھوڑ گئے ہیں،ان کی سابقہ حکمرانوں پر گند ڈالنے کی گردان اتنی مضبوط ہے کہ اگر انہیں پانچ سال اور بھی مل جائیں تب بھی وہ یہی مشق دہرائیں گے، پی ٹی آئی  نے ’ نیا پاکستان ‘ بناتے بناتے’پرانا پاکستان‘ گرا دیا  ہے،اب نہ پرانا پاکستان رہا اور نہ ہی نیا بن سکا،ملک میں ناکامیوں کا تسلسل ہے، پہلی حکومتوں میں بھی ملک کی حالت بد تھی لیکن اب بدتر ہے،پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ( پی ڈی ایم والوں سے بھی پوچھنا چاہتا ہوں آپ کا کیا ایجنڈا ہے؟ پی پی، ن لیگ نے بھی ملک پر سالہا سال حکومت کی، بتائیں عوام کے لیے کیا کیا؟ پی ٹی آئی اور پی ڈی ایم میں فرق کرنا دانشمندی نہیں، اسمبلی میں ماؤں بہنوں کے سامنے گالیاں بکنے والوں کواڈیالہ جیل بھیجنا چاہیے،پاکستان کو امریکی ساہوکاروں سے نجات دلانے کا وقت آگیا۔

مردان میں ایک بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہو ئےامیر جماعت اسلامی نےکہا کہ ملک میں جمہوری اور پرامن اسلامی انقلاب لاکر طبقاتی نظام تعلیم کا خاتمہ کیا جائے گا،سودی معیشت کے استحصالی نظام سے جان چھڑائی جائے گی، ریاست بوڑھے مردوخواتین، بے روزگار نوجوان، مزدور اور کسان کو مکمل تحفظ فراہم کرے گی،عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی یقینی بنائیں گے،صحت کی بنیادی سہولیات مفت فراہم کریں گے اور اشیائے خورد نوش پر سبسڈی دے کر اس کی سستے داموں فراہمی یقینی بنائیں گے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ اچھا ہوا پی ٹی آئی کی بھی عوام کو پہچان ہو گئی اور ثابت ہوگیا کہ ان کے پاس بہتری کا کوئی ایجنڈا نہیں،موجودہ حکمرانوں نے کشمیر کا سودا کیا اور اداروں کو برباد کیا، حد تو یہ ہے کہ ایک وفاقی وزیر خود ہی پی آئی اے کے خلاف سلطانی گواہ بنے، وزیراعظم جب سابقہ حکومتوں پر گند ڈالنے کی ذمہ داری عائد کرتےہیں تو ان سے پوچھاجاناچاہیےکہ پی ٹی آئی کےدورمیں گندمیں کمی آئی یا اضافہ ہوا؟ملک میں کرپشن، بے روزگاری، مہنگائی کی وجہ سے عوام دن رات اس وقت کو کوس رہے ہیں جب پی ٹی آئی اقتدار میں آئی تھی، ملک کا حلیہ بگڑ گیا اور ہم پوری دنیا میں لاوارث قوم بن گئے،اس حکومت کی ناکامیوں کی تعداد لاحدود ہے اور اب تو وزیراعظم خود اعتراف کرنے لگے ہیں کہ اِنہوں نے عوام کے لیے کچھ نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ اس حکومت نے لنگر خانے تعمیر کروائے مگر اب ان سے ان کا انتظام بھی نہیں چلتا، زراعت برباد ہوگئی،کسان کونہ بجلی ملتی ہے نہ پانی، زرعی مداخل کی قیمتیں آسمانوں کو چھو رہی ہیں،ملک میں لاکھوں ایکڑ بنجر اراضی کو آباد کرنے کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا، اوورسیز پاکستانی پریشان ہیں، ہزاروں مختلف ممالک کی جیلوں میں بند ہیں، حکومت نے ان کو لاوارث چھوڑ دیا۔ 

سراج الحق نے کہا کہ پارلیمنٹ میں گالم گلوچ ہوتی ہے ،میرا بس چلے تو ماؤں بہنوں کے سامنے اس طرح گالیاں بکنے والوں کو پہلے سکول میں داخل کرواؤں اور اگر پھر بھی نہ سدھریں تو اڈیالہ جیل بھیجوں۔انہوں نے پی ڈی ایم کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ ان لوگوں کا عوامی فلاح کا کوئی ایجنڈا نہیں، پی ڈی ایم کی سیاست چند خاندانوں کے مفادات کا تحفظ ہے،اب جماعت اسلامی واحد چوائس ہے، ملک کو امریکی ایجنٹوں سے نجات دلانے کا وقت آگیا ہے، اسلامی نظام ہی ملک کی بقا کا ضامن ہے۔ 

مزید :

قومی -