بڑھتی ہوئی کرپشن ملکی جڑوں کو کھوکھلا کر رہی ہے،میا ں مقصود احمد

بڑھتی ہوئی کرپشن ملکی جڑوں کو کھوکھلا کر رہی ہے،میا ں مقصود احمد

  

لاہور(خبر نگار خصوصی)امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے کہاہے کہ ملک میں عوام کی محرومیوں کی اصل وجہ وسائل کی کمی نہیں بلکہ کرپشن ہے ۔ کرپشن ایک ناسور بن چکی ہے جو ملک کی جڑوں کوکھوکھلا کررہی ہے اور ملکی ترقی میں بھی سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔کرپشن کاخاتمہ کرنے اور کرپٹ افرادکا احتساب کرنے کانعرہ توہر آنے والی حکومت نے لگایامگر اس جانب عملی طور پر پیش رفت نہیں کی گئی۔جب تک کرپٹ عناصرکے خلاف بلاتفریق کاروائی اور ملک وقوم کی لوٹی ہوئی دولت واپس نہیں لائی جاتی ملک ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہوسکتا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور میں عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ نیب جیساادارہ کرپٹ عناصر کوتحفظ فراہم کرنے کاذریعہ بن چکا ہے۔اربوں کھربوں روپے لوٹنے والے پلی بارگین کرکے چھوٹ جاتے ہیں جبکہ غریب کو ناحق کئی کئی برس تک پابند سلاسل رکھاجاتاہے جوکہ فرسودہ نظام کاشاخسانہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی پربڑاسوالیہ نشان ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں کرپشن کے خلاف سب سے پہلے آواز جماعت اسلامی نے اٹھائی۔ پانامالیکس ملکی تاریخ کا سب سے بڑا اسکینڈل ہے۔حکومت پانامالیکس کے معاملے پر ٹال مٹول سے کام نہ لیتی تو پاکستان میں سیاسی بحران پیدانہ ہوتا۔انہوں نے کہاکہ پانامالیکس پر بہت تاخیر ہوچکی اب اس معاملے کومنطقی انجام تک پہنچناچاہئے۔جب تک ملک میں صحیح معنوں میں احتساب کا عمل شروع نہیں ہوجاتا تب تک نہ توکرپشن کاخاتمہ ہوسکتاہے اور نہ کرپٹ عناصر کا۔ کرپشن اور منی لانڈرنگ کرنے والوں کوکڑی سے کڑی سزاملنی چاہئے۔میاں مقصود احمد نے مزیدکہاکہ مشتاق رئیسانی کیس میں پردہ نشینوں کو بے نقاب کرنے کی بجائے پلی بارگین کرکے ان کو تحفظ فراہم کیا گیا۔پاناما لیکس حکمرانوں کے گلے کی ہڈی بن چکی ہے۔قوم کی نگاہیں سپریم کورٹ پر لگی ہیں۔جھوٹ بولنے پر وزیر اعظم کے خلاف آرٹیکل 62اور63کا اطلاق ہوتا ہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ وزیراعظم نوازشریف اپنے عہدے سے الگ ہوکر کرپشن اور ٹیکس چوری کے حوالے سے لگنے والے الزامات کاسامنا کریں اور اپنے آپ کو بے گناہ ثابت کریں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -