پنجاب فوڈ اتھارٹی کا اہم اجلاس، ملاوٹ مافیا کیخلاف بغیر کسی دباؤ کے کارروائیاں جاری رہیں گی : شہباز شریف

پنجاب فوڈ اتھارٹی کا اہم اجلاس، ملاوٹ مافیا کیخلاف بغیر کسی دباؤ کے ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف نے ملاوٹ مافیا کے خلاف بلاامتیاز کریک ڈاؤن جاری رکھنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ اس ضمن میں کسی بھی قسم کا کوئی دباؤ قبول نہ کیا جائے کیونکہ اشیائے خورد و نوش میں ملاوٹ ایک سنگین جرم ہے اور جعلی و غیر معیاری ادویات تیار و فروخت کرنیوالوں کی طرح ملاوٹ مافیا کو بھی نشان عبرت بنانا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ نے گزشتہ روز پنجاب فوڈ اتھارٹی کی کارکردگی کا جائزہ لینے سے متعلق اجلاس میں کیا۔وزیراعلیٰ نے اجلاس کے دوران پنجاب فوڈ اتھارٹی کا دائرہ کار صوبے کے دیگر5 ڈویژنوں میں بھی بڑھانے کی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ لاہور، ملتان، گوجرانوالہ، راولپنڈی اور مری کی طرز پر اتھارٹی کا دائرہ کار دیگر ڈویژنوں تک بھی بڑھانے کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں۔وزیراعلیٰ شہبازشریف نے محنت اورعزم کیساتھ ذمہ داری نبھائیں گے تو کامیابی قدم چومے گی کیونکہ عوام کو کسی بھی صورت ملاوٹ مافیا کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا۔انہوں نے کہا کہ ملاوٹ مافیا کو انسانی صحت سے نہیں کھیلنے دیں گے اورایسا کالا دھندہ کرنے والوں کو جرمانوں کے ساتھ جیلوں میں بھی جانا ہوگا لہٰذااب ملاوٹ مافیا کو صرف جرمانے نہیں بلکہ قید کی سزائیں بھی ہوں گی۔ایسے افراد اس وقت کالے کاروبار سے توبہ تائب ہوں گے جب یہ جیلو ں کی ہوا کھائیں گے۔انہوں نے کہا کہ جہاں ملاوٹ شدہ اشیائے خورد و نوش تیار یا فروخت ہوتی ہیں اس کے مالک کو پکڑا جائے اور قانون کے تحت کارروائی کی جائے۔وزیراعلیٰ نے راولپنڈی میں ملاوٹ مافیا کی پشت پناہی کرنے والے فوڈ انسپکٹر کے خلاف سخت کارروائی کا حکم دیتے ہوئے کہاکہ فوڈ انسپکٹر کے خلاف قواعد و ضوابط کے مطابق ایکشن لیتے ہوئے محکمانہ کارروائی بھی عمل میں لائی جائے۔انہوں نے کہا کہ اشیائے خور د ونوش ، گھی اور دودھ میں ملاوٹ کا خاتمہ کرنا ضروری ہے۔دودھ بچوں اور بڑوں کی بنیادی ضرورت ہے۔غیر معیاری،ناقص اور مضر صحت دودھ تیار اور فروخت کرنے والے انسانی صحت سے کھیل رہے ہیں اوریہ عناصرانسانیت کے دشمن ہیں اور ان کی سرکوبی ضروری ہے۔ ایسا گھناؤنا کاروبار کرنے والے عناصر کسی رعایت کے مستحق نہیں ۔مضرصحت کھلا دودھ ہویاڈبے والا، کسی کو چند کوڑیوں کی خاطراپنے بچوں کی زندگیوں سے کھیلنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ڈبے یا کھلے دودھ میں مضرصحت اجزاء ملانے والے مافیاسے کوئی رو رعایت نہیں ہوگی۔ عوام کو دودھ جیسی بنیادی ضرورت کے نام پر زہر کھلانے والے معاشرے کا ناسورہیں۔ صوبے کے عوام مجھے اپنی جان سے زیادہ عزیز ہیں اور کسی کوبھی دودھ کے نام پر زہر بیچنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔انہوں نے کہا کہ ملاوٹ مافیا کے خلاف سزائیں مزید سخت اور جرمانو ں میں اضافہ کیا جائے گااوراس ضمن میں پنجاب فوڈ اتھارٹی ایکٹ 2011 میں ضروری ترامیم کی جائیں۔انہوں نے کہا کہ اتھارٹی کا دائرہ کار بڑھانے کے ساتھ بہترین کوالیفائیڈ ہیومن ریسورس کی بھرتی کا عمل جلد مکمل کیا جائے۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ اتھارٹی میں خالی آسامیوں کیلئے بھرتی کا عمل شفاف طریقے سے جلد مکمل کیا جائے۔وزیراعلیٰ نے بھرتیوں کے عمل میں تاخیر پرناراضگی کااظہارکیااورکہاکہ پنجاب پیور فوڈ رولز 1960 میں ترامیم کا مسودہ جلد تیار کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ اتھارٹی کے کاموں کیلئے سمری مت بھیجی جائے، از خود فیصلے کرکے عملدرآمد کیا جائے۔وزیراعلیٰ نے پنجاب فوڈ اتھارٹی میں انٹیلی جنس سسٹم کے قیام کی منظوری دے دی۔انٹیلی جنس سسٹم کے ذریعے ملاوٹ مافیا کا سراغ لگایا جاسکے گا اور اتھارٹی کے عملے پر بھی کڑی نظر رکھی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ملاوٹ کرنے والے مافیا کو ختم کریں گے اورعوام کو حفظان صحت کے اصولو ں کے مطابق اشیائے خورد و نوش کی فراہمی ہر صورت یقینی بنائیں گے۔دریں اثناء صوبے میں جعلی و غیر معیاری ادویات کے خاتمے اور معیاری ادویات کی فراہمی یقینی بنانے کے حوالے سے کئے جانے والے اقدمات پر پیش رفت کا جائزہ لینے کے حوالے سے منعقد اجلا س میں وزیراعلیٰ نے جعلی و غیرمعیاری ادویات کے خلاف مہم کو مزید تیز کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ جعلی اور غیر معیاری ادویات تیار و فروخت کرنے والوں کے خلاف زیرو ٹالرنس پالیسی کے تحت کارروائی جاری رکھی جائے۔ انہو ں نے کہا کہ جعلی و غیر معیاری ادویات تیار و فروخت کرنے والوں کے خلاف سزائیں سخت کی گئی ہیں اور جرمانوں کو بڑھایا گیا ہے۔ معیاری ادویات ہر مریض کا حق ہے اور یہ حق انہیں ہرصورت پہنچائیں گے ۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ معیاری ادویات کی فراہمی کیلئے لاہور میں جدید ڈرگ ٹیسٹنگ لیب کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے جبکہ دیگر پانچ شہروں میں بھی اس ضمن میں ڈرگ ٹیسٹنگ لیبز کو اپ گریڈ کیاجارہاہے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ نئے تربیت یافتہ عملے کولاہورکی ڈرگ ٹیسٹنگ لیب میں جلد تعینات کیا جائے اور ادویات کے نمونے بیرون ملک دنیا کی بہترین لیبارٹریوں سے بھی چیک کرائے جائیں۔ انہو ں نے کہا کہ صوبے سے جعلی اور غیر معیاری ادویات کا گورکھ دھندا ہر قیمت پر بند کرائیں گے۔متعلقہ محکموں اور اداروں کو اس ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے جذبے، عزم اور ذمہ داری کے ساتھ فرائض سرانجام دینا ہیں۔

شہبازشریف

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے گزشتہ روز اتفاق ہسپتال میں زیر علاج جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ اورکشمیر کمیٹی کے چےئرمین مولانا فضل الرحمن کی عیادت کی۔ وزیراعلیٰ نے مولانا فضل الرحمن کی جلد صحت یابی کی دعا کرتے ہوئے ان کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا اور کہا کہ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ آپ جلد صحت یاب ہوں۔ وزیراعلیٰ نے مولانا فضل الرحمن کو گلدستہ بھی دیا۔

مزید :

صفحہ اول -