ریونیو بورڈ کی سروس پالیسی سفارشوں تلے دب گئی، کئی افسر تبادلے رکوانے میں کامیاب

ریونیو بورڈ کی سروس پالیسی سفارشوں تلے دب گئی، کئی افسر تبادلے رکوانے میں ...

  

لاہور(عامر بٹ سے)بورڈ آف ریونیو پنجاب کے 3سالہ سروس پالیسی پر عملد درآمد کے اعلان کے بعد سینکڑوں ریونیو افسران اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈز کی اپنی ٹرانسفر رکوانے کے لئے کی جانے والی کوششیں رنگ لے آئیں،درجنوں اے ڈی ایل آر ز نے سیاسی سفارشوں سے اپنے تبادلے رکوا لئے ،بورڈ آف ریونیو نے کچھ سال پہلے اے ڈیل آر ز کی اپنے ضلع میں کام کرنے پر پابند ی لگا دی تھی جس کے باوجود درجنوں اے ڈی ایل آر ذاتی اثرورسوخ کی بناء پر اپنے ضلع اور تحصیل میں ڈیوٹیاں کرنے میں مصروف ،اپنے علاقہ کی بودوباش ،ماحول ،سیاسی لوگوں سے میل ملاپ اور تعلقات کی بدولت کرپشن کی شکایات میں بھی اضافہ ہوتا جارہاہے۔تفصیلات کے مطابق بورڈ آف ریونیو پنجاب نے چند سال پہلے کمپیوٹرائزڈ اراضی ریکارڈ سنٹرز میں تعینات اے ڈی آیل آر ز کی اپنے ضلع میں کام کرنے پر پابندی لگا دی تھی جس پر کچھ عرصہ تو عمل ہوا لیکن اس کے بعد سیاسی لوگوں کی مداخلت اور سفارشوں کی بناء پر سینکڑوں ڈی ایل آرز نے اپنے ضلع میں ڈیوٹیاں لگوا لیں بلکہ درجنوں تو اپنی متعلقہ تحصیل میں پہنچنے میں کامیاب ہوگئے ، چند دن پہلے پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی جانب سے تین سالہ سروس پالیسی اور اپنے ضلع میں ڈیوٹی نہ کرنے کے قانون پر سختی سے عمل درآمد کرنے کے اعلان کے بعد ان تمام اے ڈی ایل آر ز کی لسٹیں مرتب کرنا شروع کردیں جو تین سال سے زائد عرصہ ایک جگہ تعینات رہے یا جو اپنے ضلع اور تحصیل میں کام کررہے ہیں ،اس اطلاع کے بعد سینکڑوں اے ڈی ایل آر ز نے سیاسی لوگوں کی سفارشات اور مداخلت سے ناصرف اپنا ٹرانسفر رکوا لیا ہے بلکہ اپنے ضلع میں ہی کام کرنے میں مصروف ہیں ،ذرائع نے آگاہی دی کہ ہے پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کا تین سالہ سروس پالیسی اور کسی بھی اے ڈی ایل آرز کے اپنے ضلع میں کام نہ کرنے پر پابندی کااقدام کسی صورت پورا نہیں ہو گا کیونکہ اب تک مبینہ طور درجنوں اے ڈی ایل آر ز نے اپنے ٹرانسفر رکوانے کے علاوہ اپنے متعلقہ ضلع میں ہی ڈیوٹی کرنے کی یقین دہانیاں حاصل کر لیں ہیں ،اب جن سیاسی لوگوں کی مداخلت سے اے ڈی ایل آر صاحب اپنے تبادلے رکوانے میں کامیاب ہو چکے ہیں جس سے ایک طرف تو کرپشن کو مزید بڑھاوہ ملے گا اور دوسری طرف اراا ضی ریکارڈ سنٹر ز میں سیاسی لوگوں کی اجارہ داری قائم ہو گی۔پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے ترجمان نے کہا ہے کہ تین سالہ سروس پالیسی پر ہر صورت عمل درآمد ہو گا ،کوئی بھی اے ڈی ایل آر ز نہ تو تین سال سے زیادہ ایک جگہ تعینات رہے گا اور نہ ہی وہ اپنے ضلع میں کام کرے گا ،چند دنوں میں ٹرانسفر اور پوسٹنگ کا عمل شروع کر دیا جائے گا ۔

ریونیو بورڈ

مزید :

صفحہ آخر -