کراچی،تھانے پر فائرنگ اور دستی بم حملہ،رکشہ ڈرائیور جاں بحق،2کانسٹیبل زخمی

کراچی،تھانے پر فائرنگ اور دستی بم حملہ،رکشہ ڈرائیور جاں بحق،2کانسٹیبل زخمی

  

کراچی(کرائم رپورٹر)شہر قائد میں نامعلوم افراد کی جانب سے تھانے پر دستی بم حملے اور ٹریفک پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق جبکہ 2 اہلکار زخمی ہوگئے ہیں، زخمیوں کو طبی امدادکے لیے اسپتال منتقل کردیاگیا۔تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے نارتھ ناظم آباد میں تیموریہ تھانے پر موٹرسائیکل پر سوار نامعلوم افراد نے دستی بم سے حملہ کیا، جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار زخمی ہوگیا ۔جس کی شناخت 50سالہ محمداقبال ولد انوارالحق کے نام سے ہوئی ۔زخمی پولیس اہلکار کو طبی امدادکے لیے قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا۔ زخمی کانسٹیبل کے مطابق ملزموں کی جانب سے پھینکا گیا کریکر تھانے کے اندر آ کر گرا تھا۔پولیس حکام کے مطابق تھانے پر حملہ کرکے فرار ہوتے ہوئے دہشت گردوں نے فائیو اسٹار چورنگی نا رتھ نا ظم آباد پر کھڑے ٹریفک پولیس کے اہلکاروں پرفائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ٹریفک پولیس اہلکار اور راہگیر زخمی ہوگیا، جنہیں طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا جہاں راہگیر زخموں کی تاب نہ لاکر جاں بحق ہوگیا۔زخمی ٹریفک پولیس اہلکارکی شناخت 44سالہ بشیرولد رمضان جبکہ جاں بحق ہونے والے راہگیرکی شناخت 25سالہ علی عمران ورحمان کے نام سے ہوئی ہے۔زخمی ٹریفک پولیس اہلکار بشیر کے مطابق دو موٹر سائیکلوں پر سوار چار ملزمان تھے ۔ ملزموں نے شال اوڑھ رکھی تھی ۔ انہوں نے 9 ایم ایم اور ایس ایم جی سے فائرنگ کی ۔ ملزموں نے پہلی گولی اس کے سر کا نشانہ لے کر ماری ، گولی اس کی ٹوپی کو چھوتی ہوئی نکل گئی ،ایک گولی پیٹ پر لگی ، بلٹ پروف جیکٹ کی وجہ سے بچ گیا ۔ ملزم سخی حسن کے راستے سے آئے اور اسی جانب فرار ہوئے ۔ڈی آئی جی ویسٹ ذوالفقار لاڑک کے مطابق موٹرسائیکل پر سوار 2 افراد نے تھانے کی دیوار پر کریکر پھینکا اور فرار ہوگئے جب کہ ملزمان نے فائیو اسٹار چورنگی پر ٹریفک اہلکاروں پر بھی فائرنگ کی تاہم اہلکاروں کی جوابی فائرنگ سے ملزمان فرار ہوگئے۔ موٹر سائیکل پر سوار ملزمان میں سے ایک نے ہیلمٹ اور دوسرے نے رومال لپیٹا ہوا تھا تاہم علاقے کی ناکہ بندی کرکے ملزمان کی تلاش شروع کردی گئی ہے۔دوسری جانب آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے تھانے پر حملہ اور ٹریفک اہلکاروں پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی ہے جب کہ آئی جی سندھ نے ہدایات جاری کیں ہیں کہ تفتیش کو انتہائی مربوط اور موثر بنایا جائے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -