دو سال گزر گئے، وفاقی دارالحکومت میں نظام صلوة کا نفاذ نہ ہو سکا

دو سال گزر گئے، وفاقی دارالحکومت میں نظام صلوة کا نفاذ نہ ہو سکا
دو سال گزر گئے، وفاقی دارالحکومت میں نظام صلوة کا نفاذ نہ ہو سکا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی دارالحکومت میں ایک ہی وقت اذان و نماز کا خواب ادھورا ہی رہ گیا ہے اور 2 سال گزر جانے کے باوجود بھی نظام صلوة نافذ نہیں ہو سکا ہے ۔

نکاح پر نکاح، دولہا کو25سال،دولہن،گواہان اور نکاح خواں کو 7,7سال قید کی سزا

تفصیلات کے مطابق یکم مئی 2015ءکو فیصل مسجد سے امام کعبہ کے ذریعے نظام صلوة کااعلان کرایاگیاتھا جس کے بعد اسلام آبادکی 700 سے زائد مساجد میں ایک ہی وقت میں اذان ونمازکاکیلنڈر بھی تیارکیاگیاتھا اور اس کیلنڈر پر عملدرآمد کیلئے تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام پرمشتمل مانیٹرنگ کمیٹی بھی قائم کی گئی۔

جعلی عامل کی ساتھیوں کے ہمراہ شادی شدہ خاتون سے زیادتی

ذرائع کے مطابق حکومت کی یہ تمام کوششیں اب تک بے سود رہی ہیں اور 2 سال گزر جانے کے باوجود بھی وفاقی دارالحکومت میں نظام صلوة کا نفاذ نہیں ہو سکا ہے۔ اس مقصد کیلئے جو کمیٹی قائم کی گئی اس کے متعدد اجلاس بھی بے نتیجہ رہے ہیں اور اب تو معاملہ بالکل ہی ٹھنڈا ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔

مزید :

اسلام آباد -