مصباح الحق کا کوئی متبادل ہی نہیں، اسے جانے کا کیوں کہہ رہے ہیں: جاوید میانداد

مصباح الحق کا کوئی متبادل ہی نہیں، اسے جانے کا کیوں کہہ رہے ہیں: جاوید میانداد
مصباح الحق کا کوئی متبادل ہی نہیں، اسے جانے کا کیوں کہہ رہے ہیں: جاوید میانداد

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) لیجنڈ کرکٹر جاوید میانداد نے کہا ہے کہ ہم مصباح الحق سے جانے کا کیوں کہہ رہے ہیں جبکہ ہمارے پاس اس کا متبادل ہی نہیں ہے جس کی وجہ پاکستان میں ڈومیسٹک کرکٹ کا کمزور نظام ہے۔

سڈنی ٹیسٹ میں بھی قومی ٹیم کو 220 رنز سے شکست، آسٹریلیا نے پاکستان کو مسلسل چوتھی بار وائٹ واش کر دیا

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کے ہاتھوں سیریز میں وائٹ واش کے بعد مصباح الحق کی ریٹائرمنٹ سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے جاوید میانداد نے کہا کہ ”مسئلہ یہ ہے کہ ہمارے پاس مصباح کا متبادل نہیں اور اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہمارا کرکٹ کا نظام کتنا کمزور ہے۔“

میانداد کا ماننا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے کبھی متبادل کا سوچا ہی نہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ”دنیا میں ہر جگہ ایک نظام موجود ہے اور کھلاڑی آتے اور جاتے ہیں لیکن بدقسمتی سے پاکستان میں ہم نے ایسا کوئی نظام بھی تشکیل نہیں دیا۔ ہم اب مصباح سے جانے کا کیوں کہہ رہے ہیں؟ کیا ہم نے اس کا متبادل ڈھونڈ لیا ہے؟ بدقسمتی سے ان سوالوں کا جواب نہیں ہے اور اب یہ مکمل طور پر مصباح پر منحصر ہے کہ وہ کب جانے کا فیصلہ کرتا ہے۔“

انہوں نے کہا کہ ”پاکستان کی کرکٹ کی یہ بدقسمتی ہے اور مصباح کو بھی اچھی طرح پتہ ہے کہ وہ ابھی تک ٹیسٹ ٹیم کی قیادت کرنے والا اور کوئی نہیں ہے اور اسی لئے اس نے ابھی تک اپنا ذہن نہیں بنایا۔“

ریٹائرمنٹ میں ابھی بہت وقت ہے،سوال پر مصباح کا جواب

انہوں نے مزید کہا کہ آسٹریلیا میں کھیلنے کیلئے خاص تکنیک اور مہارت کی ضرورت ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ”مجھے بڑے افسوس کیساتھ یہ کہنا پڑ رہا ہے کہ ہمارے پاس اس طرح کے کھلاڑی نہیں ہیں۔ جارحانہ کرکٹ کھیلنا ہی آسٹریلیا میں کامیابی کی ضمانت ہے لیکن ہم تینوں شعبوں میں بہت ہی زیادہ دفاعی انداز اپنائے ہوئے تھے۔“

مزید :

کھیل -