اس خوبرو روسی لڑکی کے صرف ایک کام نے پورے امریکہ کی نیندیں اڑا دیں، صدر پیوٹن بھی دیوانے ہو کر جھومنے لگے‎

اس خوبرو روسی لڑکی کے صرف ایک کام نے پورے امریکہ کی نیندیں اڑا دیں، صدر پیوٹن ...
اس خوبرو روسی لڑکی کے صرف ایک کام نے پورے امریکہ کی نیندیں اڑا دیں، صدر پیوٹن بھی دیوانے ہو کر جھومنے لگے‎

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدارتی انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ کی غیرمتوقع جیت نے امریکہ سمیت دنیا بھر کو حیران کر دیا تھا۔ الیکشن کے فوری بعد ڈونلڈ ٹرمپ کی جیت کے پیچھے کسی خفیہ ہاتھ کے کارفرما ہونے کی افواہیں گردش کرنے لگیں۔ ان افواہوں میں بالخصوص روس کا نام سامنے آیا اور کہا گیا کہ وہ امریکہ کا انتخابی سسٹم ہیک کرکے نتائج پر اثرانداز ہوا ہے اور ڈونلڈ ٹرمپ کو فتح دلوائی ہے۔

اب اس افسانے کا اہم ترین کردار سامنے آ گیا ہے، جو ایک روسی لڑکی ہے اور امریکہ کے بقول اسی نے امریکہ کا انتخابی سسٹم ہیک کیا اور نتائج تبدیل کیے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق اس لڑکی کا نام الیسا شیوکینکو (Alisa Shevchenko) ہے جو ZORنامی آئی ٹی کمپنی چلاتی ہے۔امریکہ کی طرف سے الزام عائد کیا گیا ہے کہ ZORنے الیسا کی خدمات روسی وفاق کی ’فارن انٹیلی جنس سروس‘ کو فراہم کی تھیں۔ اس الزام کے ساتھ ہی امریکہ نے ZORپر پابندی عائد کر دی ہے۔ 

رپورٹ کے مطابق امریکی انتظامیہ کی طرف سے گزشتہ دنوں پابندیوں کی زد میں آنے والی کمپنیوں کی فہرست جاری کی گئی ہے جس میں ZORکا نام بھی شامل تھا۔ بتایا گیا ہے کہ کئی بڑی بڑی کمپنیاں اپنے انٹرنیٹ سکیورٹی سسٹم میں موجود خامیوں کو دور کرکے اسے محفوظ تر بنانے کے لیے الیسا کی خدمات حاصل کر چکی ہیں۔اپنا اور اپنی فرم کا نام امریکی فہرست میں آنے پر الیسا کی طرف سے بھی ردعمل سامنے آگیا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ ”میں نے اپنی دانست میں آج تک روسی حکومت کے لیے کام نہیں کیا۔“برطانوی اخبار دی گارڈین کو لکھی گئی ای میل میں الیسا نے مزید کہا ہے کہ ” شاید وائٹ ہاﺅس نے کسی جعلی ہیکر کے ہاتھوں دھوکہ کھا کر میری فرم پر پابندی لگائی ہے، یا پھر اس نے ازخود حقائق کو مسخ کیا ہے۔

وائٹ ہاﺅس نے ایک نوجوان خاتون ہیکر اور اس کی بے یارومددگار کمپنی کو اپنے مقصد کی برآوری کے لیے آسان ہدف سمجھا ہے۔میں کبھی چھپنے کی کوشش نہیں کرتی۔ میں بہت زیادہ سفر کرتی ہوں اور دوستانہ مزاج کی،بہت بولنے والی لڑکی ہوں۔ اس سب سے بڑھ کر، میرے پاس کوئی زیادہ رقم یا طاقت نہیں، اور میرے طاقتور لوگوں سے روابط بھی نہیں کہ میں اس الزام کا اثر ختم کر سکوں۔ اول تو روس کے امریکی الیکشن کو ہیک کرنے کی پوری کہانی ہی مضحکہ خیز ہے لیکن اگر کسی ہیکر نے ایسا کیا ہے تو وہ اور کوئی بھی ہو سکتا ہے، میں نہیں ہوں۔ “

مزید :

بین الاقوامی -